سابر متی آشرم سے ”آزادی گورو پدیاترا“ کا آغاز

اپوزیشن کانگریس نے آج یہاں گجرات میں گاندھی آشرم سے ”آزادی گورو یاترا“ نکالی، تاکہ آزادی کے 75 سال منائے جاسکیں اور جدوجہد ِ آزادی اور 1947ء کے بعد ملک کی ترقی میں پارٹی کے رول کو اُجاگر کیا جاسکے۔

احمد آباد: اپوزیشن کانگریس نے آج یہاں گجرات میں گاندھی آشرم سے ”آزادی گورو یاترا“ نکالی، تاکہ آزادی کے 75 سال منائے جاسکیں اور جدوجہد ِ آزادی اور 1947ء کے بعد ملک کی ترقی میں پارٹی کے رول کو اُجاگر کیا جاسکے۔

یہ ایک طرح کی گجرات اسمبلی انتخابات کے لیے مہم شروع کی گئی ہے۔ کانگریس کے قائد نے کہا کہ پارٹی صدر سونیا گاندھی اور راہول گاندھی نے یہ یاترا منظم کرنے کا فیصلہ کیا ہے، تاکہ ہماری نئی نسلوں کو انگریزوں کی حکومت سے آزادی حاصل کرنے کے لیے ہمارے قائدین کی قربانیوں سے واقف کرایا جاسکے۔

یہ یاترا یکم جون کو دہلی میں اپنی قطعی منزل راج گھاٹ پہنچنے سے پہلے 4 ریاستوں سے گزرے گی۔1200 کیلو میٹر طویل پیدل مارچ کے دوران آئندہ دس دن میں گجرات کے 5 اضلاع کا احاطہ کیا جائے گا۔ کانگریس قائدین نے یہ بات بتائی۔

کانگریس سیوا دل کے سینکڑوں ارکان نے آج صبح پدیاترا شروع کرنے سے پہلے آشرم میں ہردئے کنج میں منعقدہ دعائیہ اجتماع میں شرکت کی۔ انہوں نے اپنے ہاتھوں میں پارٹی پرچم اٹھا رکھے تھے۔

مہاتما گاندھی نے آزادی سے متعلق تمام اہم سرگرمیوں اور سماج کی ترقی کا کام آشرم سے شروع کیا تھا، جسے عام طور پر سابرمتی آشرم کے نام سے جانا جاتا ہے۔ انہوں نے 12 مارچ 1930ء کو نمک کا قانون توڑنے ڈانڈی تک مارچ کیا تھا۔

یہ یاترا آزادی کے 75 سال کی یاد منانے اور جدوجہد ِ آزادی میں کانگریس کے رول اور مابعد آزادی ملک کے لیے اس کی خدمات کو اجاگر کرنے کے مقصد سے نکالی جارہی ہے۔ کانگریس قیادت بشمول گجرات کے انچارج رگھو شرما، ریاستی یونٹ کے صدر جگدیش ٹھاکر اور دیگر نے پدیاترا کو جھنڈی دکھاکر روانہ کیا۔

رگھو شرما نے نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ ایک ایسے وقت جب ملک ہندوستان کی آزادی کے 75 سال منا رہا ہے، ہماری قومی صدر سونیا گاندھی اور راہول گاندھی نے ”آزادی کی گورو یاترا“ نکالنے کا فیصلہ کیا ہے، تاکہ ہماری نئی نسلوں کو انگریزوں کی حکومت سے آزادی کے لیے ہمارے قائدین کی جانب سے دی گئی قربانی سے واقف کرایا جاسکے۔

انہوں نے کہا کہ یہ یاترا آئندہ 10 دن میں گجرات کے 5 اضلاع سے گذرے گی اور پھر راجستھان میں داخل ہوگی، جس کا 42 دن میں احاطہ کیا جائے گا۔ یاترا ہریانہ اور دہلی سے ہوتے ہوئے راج گھاٹ پر ختم ہوگی۔

شرما نے کہا کہ یہ یاترا اہمیت کی حامل ہے کیوں کہ یہ ایک ایسے وقت نکالی جارہی ہے جب ملک کو فرقہ پرست طاقتوں سے خطرہ محسوس ہورہا ہے جو جمہوریت کے لیے خطرہ بن گئی ہیں۔ آزادی گورو مارچ کا مقصد فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور باہمی الفت پیدا کرنا ہے۔

اس کے علاوہ آزادی کے لیے کانگریس قائدین کی جانب سے دی گئی قربانیوں سے نئی نسلوں کو واقف کرانا ہے۔ گجرات کانگریس نے ایک بیان میں کہاکہ گجرات کے 5 اضلاع میں ٹیابلائیڈ کے ذریعہ جدوجہد ِ آزادی میں کانگریس کے رول کو اجاگر کیا جائے گا۔

تبصرہ کریں

Back to top button