سری لنکا کے نئے وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے بن سکتے ہیں

اگرچہ وکرما سنگھے نے باضابطہ طور پر اس بات کی تصدیق نہیں کی ہے کہ آیا وہ وزیر اعظم کے عہدہ پر راضی ہوئے ہیں یا نہیں، ذرائع کا خیال ہے کہ انہیں اس ہفتے وزیر اعظم مقرر کیا جا سکتا ہے۔

کولمبو: سری لنکا کی یونائیٹڈ نیشنل پارٹی (یو این پی) کے رہنما رانیل وکرما سنگھے ملک کے نئے وزیر اعظم بن سکتے ہیں۔ ڈیلی مرر نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ صدر گوٹابایا راجا پاکسے نے چہارشنبہ کی شام وکرما سنگھے کے ساتھ بند کمرے میں بات چیت کی۔ رپورٹ کے مطابق بات چیت کے دوران راجا پاکسے نے وکرما سنگھے کو وزیر اعظم کا عہدہ سنبھالنے کی پیشکش کی۔ وکرماسنگھے نے مظاہرین پر زور دیا کہ وہ پرامن احتجاج جاری رکھیں۔

اگرچہ وکرما سنگھے نے باضابطہ طور پر اس بات کی تصدیق نہیں کی ہے کہ آیا وہ وزیر اعظم کے عہدہ پر راضی ہوئے ہیں یا نہیں، ذرائع کا خیال ہے کہ انہیں اس ہفتے وزیر اعظم مقرر کیا جا سکتا ہے۔ دوسری طرف اہم اپوزیشن پارٹی سماگی جنا بالاویگایا (ایس جے بی) کے لیڈر ساجیت پریماداسا نے کل پارٹی لیڈروں کے ساتھ ایک دن کی میٹنگ کی۔

کچھ رہنماؤں نے سنگین سیاسی عدم استحکام کے تناظر میں غیر مشروط طور پر وزیر اعظم کا عہدہ سنبھالنے پر زور دیا۔ قبل ازیں مسٹر پریماداسا کو نئی حکومت کی سربراہی کے لیے کہا گیا تھا، لیکن انھوں نے مسٹر گوتابایا راجا پاکسے سے پہلے صدر کے عہدے سے دستبردار ہونے کی شرط رکھی تھی۔

دریں اثنا، وکرما سنگھے کے ساتھ مسٹر راجا پاکسے کی ملاقات کے بارے میں معلوم ہونے پر ایس جے بی کیمپ نے کہا کہ وہ چار شرائط کے تحت نئی حکومت بنانے کے لیے تیار ہے۔ ان شرائط میں صدر کا ایک مقررہ مدت کے اندر استعفیٰ، نئی حکومت کے کام میں مداخلت نہ کرنے کا عہد، ورکنگ صدر کے عہدے کا خاتمہ اور معاشی استحکام کو یقینی بنانے کے بعد عام انتخابات کا انعقاد شامل ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button