ہبت اللہ اخوندزادہ افغانستان کے رہبر ہوں گے

نئی حکومت کے بارے میں مشاورت کو تقریباً قطعیت دے دی گئی ہے اور کابینہ کے تعلق سے ضروری بات چیت کی گئی ہے۔ اسلامی حکومت جس کا ہم اعلان کریں گے عوام کیلئے ایک مثالی حکومت ہوگی۔

کابل: طلوع نیوز کی اطلاع کے بموجب طالبان نے کہا ہے کہ ملا ہبت اللہ اخوندزادہ لیڈر ہوں گے جن کے تحت وزیر اعظم یا صدر حکومت چلائیں گے۔ اطلاع میں بتایاگیا طالبان کے تہذیبی کمیشن کے رکن امان اللہ ثامن غنی نے بتایاکہ اخوندزادہ نئی حکومت کے رہنماء بھی ہوں گے۔

ثامن غنی نے کہا ”نئی حکومت کے بارے میں مشاورت کو تقریباً قطعیت دے دی گئی ہے اور کابینہ کے تعلق سے ضروری بات چیت کی گئی ہے۔ اسلامی حکومت جس کا ہم اعلان کریں گے عوام کیلئے ایک مثالی حکومت ہوگی۔

واضح العقیدہ اخوندزادہ کے کمانڈر ہونے کے بارے میں شک وشبہ کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ وہ حکومت کے رہبر ہوں گے اور اس حصہ میں کوئی سوال نہیں کیاجانا چاہئے۔

اس دوران غیر مصدقہ اطلاعات میں اس بات کا اشارہ دیا گیا ہے کہ نئی حکومت میں وزیر اعظم کا عہدہ بھی رہے گا۔

سیاسی تجربہ نگار محمد حسن حق یار نے کہا نئے نظام کا نام جمہوریہ یا امارات ہونا چاہئے۔ یہ اسلامی حکومت کی طرح رہے گا۔ اخوندزادہ حکومت کے اعلیٰ منصب پر فائز ہوں گے اور وہ صدر نہیں رہیں گے۔ وہ افغانستان کے رہبر ہوں گے۔ ان کے تحت وزیر اعظم یا صدر رہیں گے۔

ان کی نگرانی میں کام کریں گے۔ طالبان کی جانب سے گورنرس کا پہلے ہی تقرر کردیا گیا ہے اور مختلف صوبوں واضلاع کیلئے پولیس چیف وپولیس کمانڈرس کو بھی مقرر کردیاگیا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.