شرجیل امام کی درخواست ضمانت پر پولیس سے جواب طلب

جسٹس رجنیش بھٹناگر نے استغاثہ کو نوٹس جاری کی اور کہا کہ درخواست ضمانت کا جواب دیا جائے۔ عدالت نے معاملہ کی مزید سماعت آئندہ سال 11 فروری کو مقرر کی۔ سینئر وکیل سنجے آر ہیگڈے نے شرجیل امام کی نمائندگی کی۔

نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ نے چہارشنبہ کے دن پولیس سے کہا کہ وہ جے این یو طالب علم شرجیل امام کی درخواست ضمانت کا جواب دے جو 2019 کے مخالف سی اے اے۔ این آر سی احتجاج کے دوران اشتعال انگیز تقریر کرنے کے الزام میں غداری کیس میں گرفتار ہوا تھا۔ جسٹس رجنیش بھٹناگر نے استغاثہ کو نوٹس جاری کی اور کہا کہ درخواست ضمانت کا جواب دیا جائے۔ عدالت نے معاملہ کی مزید سماعت آئندہ سال 11 فروری کو مقرر کی۔ سینئر وکیل سنجے آر ہیگڈے نے شرجیل امام کی نمائندگی کی۔ 32 سالہ شرجیل نے کہا کہ تمام شریک ملزمین ضمانت پر رہا ہوچکے ہیں اور وہ 20 ماہ سے جیل میں بند ہے۔اس نے کہا کہ ایف آئی آر میں اس کا نام نہیں ہے اور ایف آئی آر میں جن واقعات کا ذکر ہے ان سے اس کا کوئی لینا دینا نہیں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button