شمال مشرقی دہلی فسادات۔ کلیم احمد، شاہ رخ پٹھان کو پناہ دینے کا خاطی

پولیس کا دعویٰ ہے کہ پٹھان نے شاملی میں کلیم احمد کے مکان میں پناہ لی تھی۔ موبائل فون لوکیشن سے یہ ثابت ہوئی۔

نئی دہلی: دہلی کی ایک عدالت نے ایک شخص کو شاہ رخ پٹھان کو پناہ دینے کا خاطی قراردیا۔ پٹھان گزشتہ برس شمال مشرقی دہلی فسادات کے دوران ایک پولیس والے پر مبینہ طورپر بندوق تان دینے کے بعد فرار ہوگیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ 24 فروری 2020 کو اس نے ہلاک کرنے کی نیت سے دہلی پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل دیپک داہیہ پر بندوق تانی تھی۔

سوشیل میڈیا پر تصاویر وائرل ہونے پر وہ فرار ہوگیا تھا۔ اسے 3 مارچ 2020 کو اترپردیش کے ضلع شاملی کے بس اسٹانڈ سے پکڑا گیا تھا۔ وہ فی الحال تہاڑ جیل میں بند ہے۔

پولیس کا دعویٰ ہے کہ پٹھان نے شاملی میں کلیم احمد کے مکان میں پناہ لی تھی۔ موبائل فون لوکیشن سے یہ ثابت ہوئی۔

26-27 مارچ کی رات سے 3 مارچ تک وہ کلیم احمد کے مکان میں مقیم رہا۔

کلیم احمد نے نیا موبائل فون خریدنے میں ملزم کی مدد کی تھی۔سزا سنانے پر 16 دسمبر کو بحث ہوگی۔ زیادہ سے زیادہ سزا جرمانہ کے ساتھ 7 سال ہوسکتی ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button