معاہدہ توڑنے پر ٹویٹر ایلون مسک پر شدید برہم

واضح رہے کہ مسک نے جمعہ کو ٹویٹر کے چیف قانونی افسر کو اپنے وکیل کے ذریعے ایک خط بھیجا جس میں 44 بلین ڈالر کے ٹویٹر معاہدے کو ختم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

واشنگٹن: ٹویٹر بورڈ کے چیئرمین بریٹ ٹیلر نے ہفتہ کو کہا کہ کمپنی، ٹویٹر کی فروخت کے معاہدے پر دباؤ ڈالنے کے لئے ٹیسلا کے سی ای او ایلن مسک کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کرے گی۔

واضح رہے کہ مسک نے جمعہ کو ٹویٹر کے چیف قانونی افسر کو اپنے وکیل کے ذریعے ایک خط بھیجا جس میں 44 بلین ڈالر کے ٹویٹر معاہدے کو ختم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

مسک اور ٹویٹر نے اپریل میں 54.20 ڈالر فی حصص میں ایک معاہدہ کیا، جس کی کل تعداد رقم تقریباً 44 بلین ڈالر تھی۔اس نے ٹویٹر کے دعووں کی سچائی کا جائزہ لینے کے لیے مئی میں معاہدے کو روک دیا تھا۔ ٹوئٹر نے دعویٰ کیا تھا کہ اس کے پلیٹ فارم پر پانچ فیصد سے بھی کم جعلی اکاؤنٹس موجود ہیں۔

اسپوتنک کے مطابق مسٹر مسک نے خریداری کے معاہدے کی متعدد خلاف ورزیوں کی وجہ سے معاہدے کو معطل کرنے کا فیصلہ کیا۔ہے اس میں جعلی اکاؤنٹس کا جامع تجزیہ مکمل کرنے کے لیے درکار معلومات فراہم کرنے میں ٹوئٹر کی ناکامی بھی شامل ہے۔

خط میں کہا گیا ہے کہ مسٹر مسک انضمام کے معاہدے کو ختم کر رہے ہیں کیونکہ ٹویٹر معاہدے کی متعدد شقوں کی مادی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ ٹویٹر نے ابھی تک مسٹر مسک کو وہ معلومات فراہم نہیں کی ہیں جس کی انہوںنے مہینوں پہلے درخواست کی تھی۔ انہوں نے ٹوئٹر سے متعلق معلومات مانگی تھیں تاکہ شناخت، آرکائیو اور افشاء کرنا آسان ہو۔

خط کا جواب دیتے ہوئے، مسٹر ٹیلر نے کہا’’ٹوئٹر بورڈ مسٹر مسک کے ساتھ مل کر طے شدہ قیمت اور شرائط پر لین دین کو بند کرنے کے لیے پرعزم ہے اور انضمام کے معاہدے کو نافذ کرنے کے لیے قانونی کارروائی کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ ہم ڈیلاویئر کورٹ آف چانسری جیت جائیں گے۔‘‘

تبصرہ کریں

Back to top button