ملک میں قانون اور آئین کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں: اشوک گہلوٹ

ملک میں قانون اور آئین کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں: اشوک گہلوٹ

جے پور: راجستھان کے چیف منسٹر اشوک گہلوٹ نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں قانون اور آئین کی دھجیاں اڑاتے ہوئے جمہوریت کو خطرہ میں ڈال دیا گیا ہے اور الیکشن جیتنے کے لیے حربے استعمال کیے جا رہے ہیں۔ ملک، ریاست کے باشندوں اور نوجوانوں کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ ملک کس سمت جا رہا ہے۔

گہلوٹ نے یہاں میڈیا سے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ پوری دنیا ہمارے ملک کے آئین کو عزت کی نگاہ سے دیکھتی ہے، آئین کی بنیادی روح ہے،پوری دنیا کے ممالک اس کا احترام کرتے ہیں اور یہ اس کی دھجیاں اڑا رہے ہیں، صرف دکھاوے کے لیے باباصاحب ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکا نام لیتے ہیں ، تو کب تک چلے گایہ؟ اس لیے تشویش ہے کہ اگر وقت رہتے کرارا جواب نہ دیا گیا تو سب کو خمیازہ بھگتنا پڑے گا، یہ میرا ماننا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک قانون کی حکمرانی سے چلتا ہے جس کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں۔ آئین کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں اور جمہوریت کو خطرے میں ڈال دیا گیا ہے، سی بی آئی، ای ڈی، انکم ٹیکس ہر جگہ چھاپے پڑ گئے ہیں۔ کیا ہو رہا ہے، ملک میں، ملک، ریاست کے باشندوں اور نو جوانوں کو سمجھنا ہوگا کہ ملک کس سمت جا رہا ہے، ورنہ آنے والے وقت میں اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔

انہوں نے کہا کہ قانون کی حکمرانی نہیں ہوگی تو سب کو بھگتنا پڑے گا، ایک نہ ایک دن آج جو لوگ خوش ہو رہے ہیں، انھیں بھی بھگتنا پڑ سکتا ہے کیونکہ قانون کی حکمرانی سے ہی ملک چلتا ہے، ریاستیں چلتی ہیں، گورننس چلتی ہے، اس کی دھجیاں اڑا رہے ہیں یہ لوگ، آئین آئین کی دھجیاں اڑا رہے ہیں، جمہوریت کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button