ممتا بنرجی کو امن وامان کی صورتحال پر بات چیت کیلئے گورنر کی دعوت

دھنکھر نے الزام لگایا کہ ریاست میں امن و امان کی صورتحال بگڑ رہی ہے، جس میں وکلاء کے درمیان لڑائی اور خواتین کے خلاف تشدد شامل ہے، اور وہ اس بارے میں چیف منسٹر سے بات کرنا چاہتے ہیں۔

کولکتہ:کلکتہ ہائی کورٹ میں وکلا کے درمیان مارپیٹ اور حالیہ دنوں میں خواتین کے ساتھ عصمت در ی کے متعدد معاملے سامنے آنے کے بعد آج گورنر جگدیپ دھنکر نے ممتا بنرجی کوخط لکھ کر ریاست میں لا اینڈ آرڈر کے حالات پر بات چیت کرنے کی دعوت کی دعوی ہے۔ خط میں گورنر نے لکھا ہے کہ ”آپ کو اس بات سے اتفاق کرنا چاہیے کہ آئین اور قانون کی حکمرانی کے تحت چلنے والے نظام میں قانون کی حکمرانی تک رسائی کو روکنا جمہوریت کے تابوت میں آخری کیل ہے۔

دھنکھر نے الزام لگایا کہ ریاست میں امن و امان کی صورتحال بگڑ رہی ہے، جس میں وکلاء کے درمیان لڑائی اور خواتین کے خلاف تشدد شامل ہے، اور وہ اس بارے میں چیف منسٹر سے بات کرنا چاہتے ہیں۔ دھنکھر نے خط میں یہ بھی کہا کہ وہ چہارشنبہ کو ممتا سے اس بارے میں بات کرنا چاہتے ہیں۔

چیف منسٹر کو لکھے گئے خط میں گورنر نے لکھاہے کہ کلکتہ ہائی کورٹ کی مقدس عمارت کے اندر پیش آنے والے واقعہ دل دہلا دینے والا اور المناک ہے۔اور خواتین کے خلاف مظالم اور بگڑتے ہوئے قانون کی حالیہ لہر پر گہری تشویش کا اظہار کرتا ہوں۔انہوں نے لکھا، ”آئین اور قانون کی حکمرانی کے تحت چلنے والے نظام میں، اگر انصاف کا راستہ اور عدالتوں کے کام میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے، تو جمہوریت کی موت کی گھنٹی بجتی ہے۔”

اتفاق سے، کچھ دن پہلے، گورنر نے چیف منسٹر سے ریاست میں امن و امان کی صورتحال پر اسی طرح کی بحث کرنے کی درخواست کی تھی۔ اس کے بعد ممتا بنرجی راج بھون آئیں اور جگدیپ دھنکھر سے ملاقات کی۔ دیکھنا یہ ہے کہ کیا وزیر اعلیٰ اس بار بھی گورنر کے پیغام کا جواب دیتی ہیں یا نہیں۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button