موٹر سائیکل پر 42 ہزار روپئے کا چالان، مالک گاڑی چھوڑ کر فرار

جون میں حیدرآباد ٹریفک پولیس نے ایک ٹو وہیلر کے مالک کو پکڑا تھا، جس پر 36,185 روپئے کے 132 چالان باقی تھے جو گذشتہ 4 سال سے ادا نہیں کیے گئے تھے۔ پولیس نے گاڑی ضبط کرلی تھی، کیونکہ مالک 2018ء سے جرمانوں کی رقم ادا کرنے سے قاصر تھا۔

حیدرآباد: حیدرآباد میں ٹریفک پولیس کی جانب سے قواعد کی خلاف ورزی پر روکے جانے پر ایک شخص اپنی موٹر سائیکل چھوڑ کر فرار ہوگیا۔ بعد ازاں پولیس کو پتہ چلا کہ اس موٹر سائیکل پر زائد از 42ہزارروپئے کے 179 چالان باقی ہیں اور گذشتہ 7 سال سے جرمانہ ادا نہیں کیا گیا۔ یہ واقعہ پیر کی شام کاچی گوڑہ ٹریفک پولیس اسٹیشن کے حدود میں موسیٰ رام باغ علاقہ میں پیش آیا۔ ایک سب انسپکٹر نے اس موٹر سائیکل کو سڑک کنارے کھڑے دیکھا۔ 250 روپئے کا چالان جاری کرتے ہوئے اسے پتہ چلا کہ اس گاڑی پر 2015ء سے متعدد چالان  باقی ہیں۔ اس نے پرنٹ آؤٹ نکالا اور موٹر سائیکل سوار سے کہا کہ وہ تمام جرمانے ادا کرے۔ جملہ رقم 42,475 ہوتی تھی۔

 کاچی گوڑہ ٹریفک انسپکٹر سرینواس کے مطابق موٹر سائیکل سوار اپنی گاڑی چھوڑ کر فرار ہوگیا۔ یہ موٹر سائیکل ضلع میدک کے ساکن پی رتنیا کے نام پر رجسٹرڈ ہے۔ اس پر 9 جنوری 2015ء سے چالان باقی ہیں جو مختلف خلاف ورزیوں جیسے بغیر ہیلمٹ ڈرائیونگ، رانگ سائیڈ ڈرائیونگ، ٹریپل رائڈنگ کی پاداش میں جاری کیے گئے تھے۔ زیادہ تر چالان ہیلمٹ نہ لگانے پر جاری کیے گئے تھے۔

یہاں یہ تذکرہ مناسب ہوگا کہ جون میں حیدرآباد ٹریفک پولیس نے ایک ٹو وہیلر کے مالک کو پکڑا تھا، جس پر 36,185 روپئے کے 132 چالان باقی تھے جو گذشتہ 4 سال سے ادا نہیں کیے گئے تھے۔ پولیس نے گاڑی ضبط کرلی تھی، کیونکہ مالک 2018ء سے جرمانوں کی رقم ادا کرنے سے قاصر تھا۔  

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button