مہاراشٹرا میں سیاسی ہلچل، فرنویس دہلی پہنچے

شیوسینا کے 16 باغی ایم ایل ایز کو اسمبلی کی رکنیت سے نااہل قرار دئے جانے کے ڈپٹی اسپیکر کی نوٹس پر مزید کارروائی 11 جولائی تک روکنے کی عدالت کی ہدایت کے بعد شیوسینا کے باغی ممبران اسمبلی کے حوصلے بلندہوگئے ہیں۔

نئی دہلی: مہاراشٹر میں شیوسینا میں بغاوت کی وجہ سے ریاست میں سیاسی ہلچل کے درمیان اپوزیشن بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رہنما اور سابق وزیر اعلی دیویندر فرنویس اپنی پارٹی کے رہنماؤں سے ملاقات کے لیے منگل کو دہلی پہنچے۔ انہوں نے پارٹی صدر جے پرکاش نڈا سے دہلی میں ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔

ذرائع کے مطابق یہ ملاقات تقریباً ایک گھنٹہ تک جاری رہی جس میں مہاراشٹر کی سیاسی پیش رفت کے درمیان پارٹی کے مزید اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق مسٹر فرنویس کی راجدھانی میں وزیر داخلہ امت شاہ اور پارٹی کے دیگر لیڈروں سے ملاقات کا امکان ہے۔

شیوسینا کے 16 باغی ایم ایل ایز کو اسمبلی کی رکنیت سے نااہل قرار دئے جانے کے ڈپٹی اسپیکر کی نوٹس پر مزید کارروائی 11 جولائی تک روکنے کی عدالت کی ہدایت کے بعد شیوسینا کے باغی ممبران اسمبلی کے حوصلے بلندہوگئے ہیں۔

ان ایم ایل اے کو ڈپٹی اسپیکر نے منگل کی شام تک نوٹس کا جواب دینے کا وقت دیا تھا۔ عدالت سے وقت ملنے کے بعد قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں کہ ادھو حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا نوٹس جلد ہی آ سکتا ہے یا باغی ایم ایل اے کے ساتھ مل کر اپوزیشن اپنی اکثریت کا دعویٰ کر سکتی ہے۔

فرنویس نے پیر کو عدالت کے فیصلے کے بعد ممبئی میں مہاراشٹر بی جے پی کے سینئر لیڈروں کے ساتھ میٹنگ کی تھی۔ بی جے پی کیمپ کا دباؤ ہے کہ 288 سیٹوں والی مہاراشٹر قانون ساز اسمبلی میں اس کے ساتھ کل 170 ایم ایل اے ہیں۔ خود بی جے پی کے پاس 106 ممبران ہیں اور پارٹی کے حمایت یافتہ آزاد سمیت اس کے 113 ممبران ہیں۔

گوہاٹی کے ایک ہوٹل میں مقیم باغی گروپ کے ساتھ مسٹر ایکناتھ شندے نے آج کہا کہ ان کے ساتھ 50 ایم ایل اے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ ممبئی واپس آنے والے ہیں۔

دریں اثنا وزیراعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے باغی ایم ایل اے سے ممبئی واپس آنے اور بات چیت کرنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ براہ راست بات کرکے کوئی راستہ نکالا جاسکتا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button