مہلوک نوجوان راکیش کی نرسم پیٹ میں آخری رسومات

اگنی پتھ اسکیم کے خلاف سکندرآباد ریلوے اسٹیشن میں پرتشدد احتجاج کے دوران پولیس فائرنگ میں ہلاک ڈی راکیش کی آج ضلع ورنگل کے خانہ پور منڈل کے موضع دبیرپیٹ میں آخری رسومات انجام دی گئیں۔

ورنگل/ حیدرآباد: اگنی پتھ اسکیم کے خلاف سکندرآباد ریلوے اسٹیشن میں پرتشدد احتجاج کے دوران پولیس فائرنگ میں ہلاک ڈی راکیش کی آج ضلع ورنگل کے خانہ پور منڈل کے موضع دبیرپیٹ میں آخری رسومات انجام دی گئیں۔

قبل ازیں ایم جی ایم ہاسپٹل سے جہاں پوسٹ مارٹم کیا گیا، نرسم پیٹ تک ڈی راکیش کاارتھی جلوس نکالا گیا جس میں حکمراں جماعت ٹی آر ایس کے عوامی نمائندے اور قائدین کے علاوہ عوام کی بڑی تعداد شریک تھی۔

راکیش کی یاد میں آج ضلع ورنگل بالخصوص حلقہ اسمبلی نرسم پیٹ بھی بند منایا گیا۔ سکندرآباد ریلوے اسٹیشن میں تشدد پر آمادہ ہجوم کو منتشر کرنے کیلئے پولیس کی فائرنگ میں کل 22 سالہ ڈی راکیش ہلاک ہوگیا تھا۔

ارتھی جلوس میں ریاستی وزراء ستیہ وتی راتھوڑ، ای دیا کر راؤ، ایم کویتا ایم پی، ایم ایل ایز ونئے بھاسکر اور پی سدرشن ریڈی اور دیگر شریک تھے۔ جلوس جب پوچما میدان پہنچا تب اس علاقہ میں ہلکی کشیدگی اُس وقت پیدا ہوئی جب چند احتجاجی نوجوانوں نے بی ایس این ایل دفتر پر حملہ کیا اور کھڑکیوں کے شیشوں کو نقصان پہنچایا۔

نوجوان، مرکز کی بی جے پی حکومت اور وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف نعرے لگا رہے تھے۔ آفس کے بورڈ اور فیلکسیز کو نذر آتش کردیا۔ پولیس فوری حرکت میں آگئی اور احتجاجیوں کو منتشر کردیا۔ ٹی آر ایس کی اپیل پر حلقہ اسمبلی نرسم پیٹ بند منایا گیا جو کامیاب رہا۔ تمام تعلیمی وتجارتی ادارے بند تھے۔

خانہ پور منڈل کے موضع دبیر پیٹ میں راکیش کی آخری رسومات انجام دی گئیں۔ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کیلئے یہاں پولیس کا سخت بند وبست کیا گیا تھا۔ راکیش فوج میں شامل ہونے کا خواہش مند تھا۔ اسکی بڑی بہن بی ایس ایف میں ہے۔

راکیش نے ہنمکنڈہ کے ایک ادارہ سے کوچنگ لی تھی اُس نے فزیکل ٹسٹ پاس کیا تھا۔ تحریری امتحان کے باربار التوا سے وہ مایوس تھا، آخر کار اگنی پتھ اسکیم کے اعلان کے بعد تحریری امتحان کو منسوخ کردیا گیا جس سے وہ دلبرداشتہ تھا۔ چیف منسٹر کے سی آر نے راکیش کے افراد خاندان کے لئے25 لاکھ روپے کے معاوضہ کا اعلان کیا۔

تبصرہ کریں

Back to top button