پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کی کارروائی غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی

کانگریس‘ ترنمول کانگریس اور شیوسینا سمیت اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کے زبردست ہنگامہ کے دوران راجیہ سبھا کی کارروائی جمعرات کو غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردی گئی۔

نئی دہلی: لوک سبھا کی کارروائی جمعرات کو غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کر دی گئی۔لوک سبھا کے اسپیکر اوم برلا نے ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی ایوان کی کارروائی میں تعاون کے لیے تمام ارکان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ بجٹ اجلاس کے دوران ایوان کی پروڈکٹیوٹی صلاحیت 129 فیصد رہی۔ اجلاس کے دوران 27 نشستیں ہوئیں اور بحث 177 گھنٹے 50 منٹ تک چلی۔

انہوں نے کہا کہ صدر رام ناتھ کووند کے 31 جنوری کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے مشترکہ طور پر خطاب کرنے کے بعد صدر کے خطاب پر 2، 3 اور 7 فروری کو 15 گھنٹے 13 منٹ تک بحث ہوئی اور 7 فروری کو قرارداد کو ندائی ووٹ سے منظور کر لیا گیا۔

برلا نے کہا کہ وزیر فینانس نرملا سیتارامن کے پیش کئے گئے بجٹ پر بحث 15 گھنٹے 33 منٹ تک ہوئی۔

علیحدہ اطلاع کے بموجب کانگریس‘ ترنمول کانگریس اور شیوسینا سمیت اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کے زبردست ہنگامہ کے دوران راجیہ سبھا کی کارروائی جمعرات کو غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردی گئی۔

اپوزیشن ارکان کی ہنگامہ آرائی کی وجہ سے صدرنشین ایم وینکیا نائیڈو ایوان میں اپنا روایتی اختتامی بیان نہیں پڑھ سکے اور انہوں نے وقفہ صفر کے دوران ہی بجٹ اجلاس کی کارروائی غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی۔بجٹ اجلاس کا پہلا مرحلہ 31 جنوری کو صدر کے خطاب کے ساتھ شروع ہوا تھا۔

دوسرا مرحلہ 14 مارچ کو شروع ہوا اور مقررہ 8 اپریل سے ایک دن پہلے آج ختم کردیا گیا۔ایوان میں قانون سازی کے دستاویزات رکھے جانے کے بعد نائیڈو نے کہا کہ ایوان کی کارروائی آج غیر معینہ مدت تک کے لئے ملتوی کی جا رہی ہے اور آج کے لیے مقررہ سوالات کے جوابات کو کارروائی کا حصہ سمجھا جائے گا۔

تبصرہ کریں

Back to top button