پہلے کبھی کوئی ڈرامہ یاوزارتی تماشہ نہیں ہواتھا:جئے رام رمیش

جئے رام رمیش نے ٹوئٹر پر کہاکہ وزیراعظم نے شیخی بگھاری ہے کہ یوکرین سے تخلیہ’خودساختہ‘ نئے ہندوستان کی طاقت کو ظاہر کرتاہے ۔ 2014سے پہلے حکومت ہندنے کسی دھوم دھڑاکے یا تشہیر کے بغیرزائد از15ہزارہندوستانیوں کو 2011میں لیبیاسے نکالا تھا۔

نئی دہلی: سینئر کانگریس قائد جئے رام رمیش نے جنگ زدہ ملک یوکرین سے ہندوستانی شہریوں کے تخلیہ پرحکومت پر طنز کیا اورکہاکہ ماضی میں جب لیبیا،لبنان اورخلیجی ممالک سے لوگوں کو واپس لایاگیاتھا تو اس وقت کوئی ڈرامہ یا وزارتی تماشہ نہیں کیاگیاتھا۔

انہوں نے ٹوئٹر پر کہاکہ وزیراعظم نے شیخی بگھاری ہے کہ یوکرین سے تخلیہ’خودساختہ‘ نئے ہندوستان کی طاقت کو ظاہر کرتاہے ۔ 2014سے پہلے حکومت ہندنے کسی دھوم دھڑاکے یا تشہیر کے بغیرزائد از15ہزارہندوستانیوں کو 2011میں لیبیاسے نکالا تھا۔ 2006میں تقریباً 2300افراد کولبنان سے اور1999میں تقریباً17 ہزارافراد کوخلیجی ممالک سے نکالا گیاتھا۔

 اس وقت کوئی ڈرامہ یا وزارتی تماشہ نہیں ہوا۔ واضح رہے کہ حکومت نے اپنے4وزراء کوبیرون ملک روانہ کیاہے تاکہ وہ یوکرین سے ہندوستانیوں کے تخلیہ میں تال میل اورتعاون کریں۔  کئی وزراء کوطلبہ کی وطن واپسی پران کے استقبال کیلئے تعینات کیاگیا ہے۔ رمیش نے خانگی میڈیکل کالجس میں فیس کوباقاعدہ بنانے کے دعویٰ پر بھی وزیراعظم نریندرمودی کونشانہئ تنقید بنایا۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button