کانگریس میں ٹوٹ پھوٹ اور بھگدڑ مچی ہے: نروتم مشرا

نروتم مشرا نے کہا کہ ایک ہفتے میں کپل سبل، سنیل جاکھڑ اور ہاردک پٹیل نے کانگریس چھوڑ دی۔ کانگریس کو بھارت جوڑو کے بجائے کانگریس جوڑو ریلی نکالنا چاہئے تو فائدہ ہوگا۔

کھنڈوا: مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ نروتم مشرا نے کانگریس پارٹی پر حملہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس میں بھگدڑ مچی ہوئی ہے اور ٹوٹ پھوٹ کا سلسلہ جاری ہے۔ وزیر داخلہ ڈاکٹر مشرا آج صبح یہاں پہنچے اور ضلع میں امن و امان کی صورتحال پر عہدیداروں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔

 اس دوران انہوں نے کانگریس پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ آج کانگریس کی حالت دیکھ کر مجھے یہ گانا یاد آرہا ہے ’’ایک دل کے ٹکڑے ہزار ہوئے، کوئی یہاں گرا کوئی وہاں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ایک ہفتے میں کپل سبل، سنیل جاکھڑ اور ہاردک پٹیل نے کانگریس چھوڑ دی۔ کانگریس کو بھارت جوڑو کے بجائے کانگریس جوڑو ریلی نکالنا چاہئے تو فائدہ ہوگا۔

پولس کنٹرول روم میں منعقدہ میٹنگ میں انہوں نے کھنڈوا میں امن و امان کی صورتحال، ٹریفک اور رہائش کے مسائل اور پولس اہلکاروں سے دیگر مسائل پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس کے ہاؤسنگ کوارٹر کو نئے بجٹ میں شامل کرنے کے حوالے سے بھی بات ہوئی ہے۔ کھنڈوا میں بٹالین یا پولیس ٹریننگ اسکول کے لیے زمین مختص کی گئی ہے، اس سلسلے میں جلد کام شروع کیا جائے گا۔

اس ملاقات کے بعد ڈاکٹر مشرا نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ کھرگون فسادات کے بعد ریاست میں کہیں بھی فسادات نہیں ہوئے ہیں۔ کانگریس کی بھارت جوڑو ریلی کے بارے میں ڈاکٹر مشرا نے آڑے ہاتھوں لیا کہ وہ کانگریس جوڑو ریلی نکالیں، جس میں انہیں فائدہ ہوگا۔ کپل سبل، سنیل جاکھڑ، ہاردک پٹیل کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس میں بھگدڑ مچی ہے، ایک ہفتے میں تین بڑے لیڈر کانگریس چھوڑ گئے۔

تبصرہ کریں

Back to top button