کرناٹک کی بی بی مسکان خان نے امتحان میں شرکت نہیں کی

ایک سینئر فیکلٹی رکن نے بتایا کہ مانڈیا سٹی کے خانگی کالج کے انتظامیہ نے مسکان کا انتظار کیا لیکن وہ امتحان دینے کیلئے نہیں آئیں۔ مسکان کے والد محمد حسین نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ اُن کی بیٹی باقی امتحانات بھی نہیں لکھے گی۔

مانڈیا: بی بی مسکان خان جنہوں نے زعفرانی شالیں اوڑھے ہوئے اور جئے شری رام کے نعرے لگانے والے لڑکوں کا بہادری کا سامنا کرتے ہوئے شہرت حاصل کی تھی جو ان سے حجاب نکال دینے کا مطالبہ کررہے تھے، جمعرات کو اپنے سمسٹر امتحانات میں شرکت نہیں کی۔ ایک سینئر فیکلٹی رکن نے بتایا کہ مانڈیا سٹی کے خانگی کالج کے انتظامیہ نے مسکان کا انتظار کیا لیکن وہ امتحان دینے کیلئے نہیں آئیں۔ مسکان کے والد محمد حسین نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ اُن کی بیٹی باقی امتحانات بھی نہیں لکھے گی۔

 انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ نے ہمارے بچوں کی ان امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے کہ انہیں حجاب پہن کر کلاسوں اور امتحانات میں شرکت کی اجازت دی جائے گی۔ ہم نے کالج سے کہا کہ وہ ہماری بچی کو حجاب پہن کر امتحان تحریر کرنے کی اجازت دے لیکن کالج نے ایسا نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ مسکان کو ایک ایسے کالج میں شریک کرائیں گے جہاں حجاب کی اجازت ہے۔

 بہرحال کالج کے حکام نے حسین کے ان دعوؤں کی تردید کی اور کہا کہ نہ تو مسکان اور نہ ان کے والد نے ان سے کوئی درخواست کی تھی۔ عہدیدار نے کہا کہ ہمیں عدالت کے فیصلہ پر اور حکومت کی ہدایت پر عمل کرنا پڑتا ہے۔ یونیورسٹی آف میسور کے رجسٹرار پرکاش نے بتایا کہ تیسرے اور پانچویں سمسٹر کے طلبہ کے امتحانات جاری ہیں۔

ذریعہ
ایجنسیز

تبصرہ کریں

Back to top button