گستاخانہ ریمارکس پر اجمیر میں خاموش جلوس نکالا گیا

جلوس میں کافی بھیڑ تھی ۔ درگاہ سے کلکٹریٹ تک سڑکوں پر صرف لوگ ہی نظر آئے۔ شہر کے قاضی توصیف احمد صدیقی کی قیادت میں اس جلوس میں درگاہ دیوان کے فرزند سید نصر الدین اور خادمین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

اجمیر: راجستھان کے اجمیر میں مسلم برادری نے پیغمبر اسلام حضرت محمدؐ کے بارے میں کی گئی بیان بازی کے خلاف آج خاموش جلوس نکالا۔ حضرت خواجہ معین الدین حسن چشتیؒ کی درگاہ سے نماز جمعہ کے بعد مسلمان نظام گیٹ پر جمع ہوئے اور بازو پر سیاہ پٹی باندھ کر احتجاج میں شامل ہوئے۔

 اس دوران ان کے ہاتھوں میں تختیاں بھی تھیں جن میں انہوں نے اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے قصورواروں کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔ جلوس میں کافی بھیڑ تھی ۔ درگاہ سے کلکٹریٹ تک سڑکوں پر صرف لوگ ہی نظر آئے۔ شہر کے قاضی توصیف احمد صدیقی کی قیادت میں اس جلوس میں درگاہ دیوان کے فرزند سید نصر الدین اور خادمین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

اس موقع پر ضلع کلکٹر انشدیپ کو صدر کے نام ایک میمورنڈم دیا گیا جس میں نوپور شرما اور نوین جندال کی طرف سے پیغمبر اسلامؐ کی شان میں کی گئی بیان بازی پر شدید ناراضگی کا اظہار کیا گیا اور مطالبہ کیا گیا کہ ملک میں ایسی باتوں کا اعادہ نہ کیا جائے جس سے ملک میں امن و امان میں خلل واقع ہو۔

جلوس کے دوران درگاہ بازار سہ پہر ایک سے چار بجے تک اس کی حمایت میں بند رہا۔ اس دوران پولیس نے صبح سے ہی سیکورٹی کے وسیع انتظامات کیے اور پولیس نے ڈرون کیمروں کی مدد سے پورے جلوس پر نظر رکھی۔

تبصرہ کریں

Back to top button