ہندوستان کے تئیں عالمی نظریہ تبدیل۔ ملک کا خودمکتفی بننا ضروری: مودی

مودی نے کہاکہ دنیا کے ہندوستان کو دیکھنے کے طریقہ میں ایک بڑی تبدیلی آرہی ہے۔ عالمی سطح پر لوگ ایک بااختیار اور مضبوط ہندوستان دیکھنا چاہتے ہیں۔

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ مرکزی بجٹ میں غریبوں، متوسط طبقہ اور نوجوانوں کو بنیادی سہولتیں فراہم کرنے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ہندوستان کا خودمکتفی بننا ضروری ہے۔ بی جے پی کی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مابعد کووِڈ ایک نئے ورلڈ آرڈر کے امکانات ظاہر ہورہے ہیں۔

 دنیا کے ہندوستان کو دیکھنے کے طریقہ میں ایک بڑی تبدیلی آرہی ہے۔ عالمی سطح پر لوگ ایک بااختیار اور مضبوط ہندوستان دیکھنا چاہتے ہیں۔ یہ انتہائی اہم ہے کہ ہندوستان نہ صرف خودمکتفی بنے بلکہ آتم نربھر بھارت کی بنیاد پر ایک جدید ہندوستان بنے۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے علاوہ ہر گوشہ سے بجٹ کا خیرمقدم کیا گیا ہے۔

یہ بجٹ غریبوں، متوسط طبقات اور نوجوانوں کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔ ان کی حکومت بنیادی سہولتوں کو بہترین بنانے کے لیے کام کررہی ہے۔ مودی نے مزید کہا کہ عالمی سطح پر لوگ ایک بااختیار اور مضبوط ہندوستان دیکھنا چاہتے ہیں۔

ہمارے لیے یہ ضروری ہے کہ ہم ملک کو تیزی سے آگے لے جائیں اور اسے کئی شعبوں میں مستحکم کریں، آتم نربھر کی بنیاد پر ایک نیا بھارت بنے، سرحدی مواضعات سے عوام کا تخلیہ قومی سلامتی کے لیے اچھا نہیں ہے اور بجٹ کے لیے سرحد پر درخشاں مواضعات بنانے کی گنجائش فراہم کی گئی ہے۔

 مودی نے یہ بھی کہا کہ حکومت سرحدی مواضعات پر نوجوانوں کو این سی سی کی ٹریننگ دینے کا منصوبہ رکھتی ہے اور مسلح افواج میں شامل ہونے کے لیے ان کی مدد کرے گی۔ بجٹ میں دیائے گنگا کے کنارے ڈھائی ہزار کیلو میٹر طویل قدرتی زرعی راہداری کا منصوبہ رکھا گیا ہے۔ بجٹ میں اسپورٹس کو اہمیت دی گئی ہے اور گذشتہ برسوں کے دوران اس میں زائد از تین گنا اضافہ کیا گیا ہے۔

بہت جلد ہر گاؤں میں آپٹیکل فائبر کنکٹیوٹی اور 5G ٹکنالوجی ہوگی۔ مودی نے یہ بھی کہا کہ ڈیجیٹل روپیہ فِن ٹیک شعبہ کے لیے نئے مواقع کھولے گا۔ بجٹ میں اسٹارٹ اپس کے لیے ٹیکس فوائد نوجوانوں کو اختراعات کے لیے تحریک دیں گے۔ مودی نے اس بات کی نشاندہی کی کہ یوپی اے کے دور کے مقابلہ میں اس بجٹ چار گنا زیادہ عوامی سرمایہ کاری کی تجویز رکھتے ہیں۔

زرعی شعبہ کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اقل ترین امدادی قیمت کے بارے میں بہت ساری باتیں کہی گئی ہیں، لیکن توقع ہے کہ دھان کے جاریہ موسم کے لیے کسانوں کو زائد از 1.5 لاکھ کروڑ روپئے ایم ایس پی حاصل ہوگی۔ مودی نے کہا کہ وزیر اعظم کی اسکیم کے تحت فراہم کیے گئے مکانات نے غریبوں کو لکھ پتی بنا دیا ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button