یوپی میں دو تہائی اکثریت سے کامیابی کا یقین: امیت شاہ

میں اکھلیش سے کہنا چاہتا ہوں کہ جس شخص کے خلاف یہ کارروائی کی گئی ہے اُس کا تعلق ایس پی کے غنڈوں سے ہیں۔ ہم اگر دھاوے کرتے ہیں تو اکھلیش کے لئے مسئلہ کیوں ہے؟۔ میں اُن سے کہنا چاہتا ہوں کہ رقم جو برآمد کی گئی ہے اُن افراد کا تعلق ایس پی کے غنڈوں سے ہے۔

بلند شہر: مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ نے آج سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے صدر اکھلیش یادو کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ عطر کے تاجر کی املاک پر دھاوؤں کی وجہ وہ ناخوش ہیں کیونکہ تاجر جس کے پاس رقم برآمد ہوئی اُس کا تعلق ایس پی کے غنڈوں سے ہے۔

یہاں پربھاوی متدادا سملن کو مخاطب کرتے ہوئے مرکزی وزیر امیت شاہ نے کہا کہ عطر کے تاجر کے کاروباری مقام پر دھاوے کئے گئے اور 250 کروڑ روپے برآمد ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ اِس طرح دھاوؤں سے سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو کے پیٹ میں درد ہورہا ہے۔

اُن کا یہ کہنا ہے کہ مودی کی جانب سے دھاوا کیوں کروایا گیا؟۔

میں اکھلیش سے کہنا چاہتا ہوں کہ جس شخص کے خلاف یہ کارروائی کی گئی ہے اُس کا تعلق ایس پی کے غنڈوں سے ہیں۔ ہم اگر دھاوے کرتے ہیں تو اکھلیش کے لئے مسئلہ کیوں ہے؟۔ میں اُن سے کہنا چاہتا ہوں کہ رقم جو برآمد کی گئی ہے اُن افراد کا تعلق ایس پی کے غنڈوں سے ہے۔

انہوں نے ادعا کیا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اترپردیش میں حکومت تشکیل دے گی اور دو تہائی اکثریت سے بی جے پی کو کامیابی حاصل ہوگی۔ یوگی آدتیہ ناتھ ریاست کے چیف منسٹر ہوں گے۔

امیت شاہ نے کہا کہ 2017ء میں جب کہ وہ یہاں آئے تھے، انہوں نے دیکھا کہ یوپی کے افراد خصوصاً مغربی اترپردیش کے رہنے والوں کو مافیا کی جانب سے ہراساں کیا جارہا تھا لیکن آج کوئی بھی بہنوں اور دختران کو ہراساں کرنے کی جرأت نہیں کرسکتا۔

مافیا پانچ سال کے دوران ریاست سے چلے گئے کیونکہ بی جے پی نے سخت اقدامات کرتے ہوئے قابل اعتراض سرگرمیوں کا تدارک کردیا ہے۔ یوگی آدتیہ ناتھ نے انہیں سبق سکھایا اور سخت کارروائی کی۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ مافیا نے ریاست میں 2000 کروڑ سے زائد مالیتی اراضیات پر قبضہ کرلیا تھا۔

انہوں نے بہوجن سماج وادی پارٹی کی صدر مایاوتی اور ایس پی کے صدر اکھلیش یادو سے کہا کہ انہوں نے مافیا اور غیر سماجی عناصر کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ معمولی غلطی سے اعظم خان جیسے افراد سکریٹریٹ میں داخل ہوں گے۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button