26/11 ممبئی حملہ‘ پاکستان نے ساجد میر کو خاموشی سے سزا سنائی

عدالت کی کارروائی جیل میں چلنے کی وجہ سے میڈیا کو اندر آنے نہیں دیا گیا۔ وکیل نے بتایا کہ ساجد میر اپریل میں گرفتاری کے بعد سے لاہو رکی کوٹ لکھ پت جیل میں بند ہے۔ عدالت نے اس پر 4 لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا۔

لاہور: ہندوستان کو انتہائی مطلوب دہشت گردوں میں ایک ساجد مجید میر کو جس کے سر پر امریکہ نے 26/11 کے ممبئی دہشت گرد حملوں میں اس کے رول کے لئے 5 ملین امریکی ڈالر کے انعام کا اعلان کررکھا ہے‘ پاکستان کی ایک انسداد ِ دہشت گردی عدالت نے دہشت گرد فینانسنگ کیس میں 15 سال جیل کی سزا سنائی ہے۔

پاکستان ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ سے نکلنے ہاتھ پیر ماررہا ہے۔ پنجاب پولیس کے محکمہ انسداد ِ دہشت گردی (سی ٹی ڈی) نے جو ایسے کیسس کی اطلاع میڈیا کو دیتا ہے‘ ساجد میر کو سزا سنائے جانے کی خبر میڈیا کو نہیں دی۔ ساجد میر کو ایسے وقت سزا سنائی گئی ہے جب ایف اے ٹی ایف کے عہدیدار اسلام آباد کا دورہ کرنے کی تیاری میں ہیں۔

لشکر طیبہ اور جماعت الدعوۃ قائدین کے ٹیرر فینانسنگ کیسس سے جڑے ایک سینئر وکیل نے جمعہ کے دن پی ٹی آئی کو بتایا کہ انسدادِ دہشت گردی عدالت(لاہور) نے جاریہ ماہ ساجد مجید میر کو 15 سال 6 ماہ کی سزا دہشت گرد فینانسنگ کیس میں سنائی۔ ساجد میر ممنوعہ لشکر طیبہ کا رکن ہے۔

عدالت کی کارروائی جیل میں چلنے کی وجہ سے میڈیا کو اندر آنے نہیں دیا گیا۔ وکیل نے بتایا کہ ساجد میر اپریل میں گرفتاری کے بعد سے لاہو رکی کوٹ لکھ پت جیل میں بند ہے۔ عدالت نے اس پر 4 لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا۔

پاکستانی حکام نے سابق میں دعویٰ کیا تھا کہ ساجد میر مرچکا ہے لیکن مغربی ممالک اس سے مطمئن نہیں ہوئے اور انہوں نے ساجد میر کی موت کا ثبوت مانگا۔ 44 سالہ ساجد میر‘ امریکی ایف بی آئی کی انتہائی مطلوب دہشت گردوں کی فہرست میں شامل ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button