دہلی

سونیا گاندھی نے معطل ارکان کے احتجاج میں حصہ لیا

کانگریس پارلیمانی پارٹی سربراہ سونیا گاندھی نے جمعہ کے دن لوک سبھا اور راجیہ سبھا دونوں اجلاس 2 بجے تک ملتوی ہونے کے بعد احاطہ پارلیمنٹ میں معطل ارکان کے احتجاج میں حصہ لیا۔

نئی دہلی: کانگریس پارلیمانی پارٹی سربراہ سونیا گاندھی نے جمعہ کے دن لوک سبھا اور راجیہ سبھا دونوں اجلاس 2 بجے تک ملتوی ہونے کے بعد احاطہ پارلیمنٹ میں معطل ارکان کے احتجاج میں حصہ لیا۔

متعلقہ خبریں
منی پور کا مسئلہ پارلیمنٹ میں پوری طاقت سے اٹھایا جائے گا: راہول گاندھی
بنگلہ دیش میں ریزرویشن احتجاج: پرتشدد جھڑپوں میں 17 افراد ہلاک، سیکڑوں زخمی
تلنگانہ تلی اتسو منانے کا فیصلہ، سونیا گاندھی کو مدعو کیا جائے گا
سی آئی ایس ایف کا 3300 رکنی دستہ آج سے پارلیمنٹ سیکوریٹی سنبھال لے گا
مودی، ملک کے وقار کی دھجیاں اُڑا رہے ہیں: سونیا گاندھی

13 دسمبر کی سیکوریٹی چُوک پر پارلیمنٹ میں آج ہنگامہ برپا تھا۔ سونیا گاندھی نے نئی پارلیمنٹ بلڈنگ کے مکردوار کے قریب احتجاج میں حصہ لیا۔

جمعرات کے دن راجیہ سبھا کے ایک اور لوک سبھا کے 13جملہ 14 ارکان کو مابقی سرمائی اجلاس سے معطل کردیا گیا۔ ترنمول کانگریس کے ڈیرک اوبرائن نے جمعرات سے خاموش احتجاج جاری رکھا ے۔

اسی دوران حکومت اور بی جے پی پر طنز کرتے ہوئے کانگریس جنرل سکریٹری جئے رام رمیش نے ایکس پر پوسٹ میں کہا کہ انڈیا اتحاد کی جماعتیں چاہتی ہیں کہ وزیر داخلہ 13 دسمبر کے واقعہ پر بیان دیں۔ وہ اس سے انکارکررہے ہیں۔

پی ٹی آئی کے بموجب اپوزیشن انڈیا اتحاد قائدین نے پارلیمنٹ کامپلکس میں جمعہ کے دن مجسمہ گاندھی کے قریب احتجاج کیا۔ معطل ارکان نے پلے کارڈس تھام رکھے تھے۔

کانگریس مطالبہ کررہی ہے کہ بی جے پی رکن پارلیمنٹ پرتاپ سمہا کے خلاف سخت کارروائی ہو جس نے دراندازوں کو وزیٹر پاس جاری کئے تھے۔ احتجاجی ارکان یہ بھی چاہتے ہیں کہ ان کی معطلی اٹھالی جائے۔

اپوزیشن کا احتجاج جاری رہنے پر دونوں ایوانوں کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی ہوگئی۔ ایس آر پرتیبن (ڈی ایم کے) کا نام بھی معطل ارکان پارلیمنٹ کی فہرست میں شامل تھا تاہم لوک سبھا نے بعدازاں ان کا نام واپس لے لیا کیونکہ وہ ایوان میں موجود نہیں تھے۔

a3w
a3w