لکھیم پور تشدد،مرکزی وزیر کا لڑکا ہنوز لاپتہ

ایف آئی آر میں آشیش مشرا کا نام درج کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ وہ اس کار کو چلارہا تھا جس نے احتجاجیوں کوکچل دیا تھا۔ ایف آئی آر کے مطابق کار سے اترنے کے بعد آشیش نے فائرنگ بھی کی تھی اور پھر روپوش ہوگیا تھا۔

لکھنؤ: اترپردیش کے ضلع لکھیم پور کھیری میں تشدد کے سلسلہ میں پولیس نے 2 افراد کو گرفتار کرلیا ہے جن کی لوکش رانا اور آشیش پانڈے کی حیثیت سے شناخت کی گئی ہے۔ پولیس کے ایک ترجمان نے یہ بات بتائی۔

یہ دونوں مرکزی وزیر اجئے مشرا تینی کے لڑکے آشیش مشرا کے قریبی ساتھی بتائے گئے ہیں۔ لکھیم پور کے ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ یہ دونوں ایک گاڑی میں بیٹھے ہوئے تھے جس نے اتوار کے روز موضع تکونیہ میں کسانوں کو کچل دیا تھا۔پولیس ان دونوں سے پوچھ تاچھ کررہی ہے۔

ایف آئی آر میں آشیش مشرا کا نام درج کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ وہ اس کار کو چلارہا تھا جس نے احتجاجیوں کوکچل دیا تھا۔ ایف آئی آر کے مطابق کار سے اترنے کے بعد آشیش نے فائرنگ بھی کی تھی اور پھر روپوش ہوگیا تھا۔

بہرحال اس واقعہ کے ایک تازہ ویڈیو سے پتہ چلتا ہے کہ لکھیم پور کھیری تشدد میں 3 ایس یو وی گاڑیاں ملوث تھیں اور ان گاڑیوں پر کوئی حملہ نہیں کیا گیا تھا۔ پہلی ایس یو وی نے احتجاجیوں کے ایک گروپ کو ٹکر دے دی تھی جو پرچم اٹھائے ہوئے چل رہے تھے۔

اس تیز رفتار گاڑی نے انہیں اچانک ٹکر دے دی تھی۔ اس کے بعد دیگر 2 ایس یو وی گاڑیوں نے بھی انہیں ٹکر دے دی۔ دیگر ملزمین کی تلاش میں مزید دھاوے جاری ہیں۔ وزیر کا لڑکا ہنوز لاپتہ ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.