کھیل

ایشان کشن اور شریاس ایئر کا سنٹرل کنٹراکٹ ختم، ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ سے باہر کرنے پر بھی غور

بی سی سی آئی نے ایشان کشن اور شریاس ایئر کو بی سی سی آئی کے سالانہ سنٹرل کنٹراکٹ سے باہر کردیا ہے۔

ممبئی: بی سی سی آئی نے ایشان کشن اور شریاس ایئر کو بی سی سی آئی کے سالانہ سنٹرل کنٹراکٹ سے باہر کردیا ہے۔

متعلقہ خبریں
کوہلی، انگلینڈ کے خلاف پہلے 2 ٹسٹ میاچس سے دستبردار
ایشان کو بھرت پر ترجیح دینا چاہئے:اظہرالدین
سلیکٹرس ٹیم میں بڑی تبدیلیوں کے موڈ میں نہیں، ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ۔کوہلی اور پنت کو جگہ ملنا تقریباً یقینی
انگلینڈ کے خلاف پہلے 2 ٹسٹ میاچس کیلئے ٹیم انڈیا کا اعلان
ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کی ممکنہ تاریخوں کا اعلان

ایک ونڈے تاریخ کی تیز ترین ڈبل سنچری کا نام ہے اور دوسرا 2023 ونڈے ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے باز کا نام ہے۔ تاہم ایک جھٹکے میں بی سی سی آئی کی نظریں ان دونوں پر پڑگئیں۔

مستقبل کے ٹورنامنٹس میں بھی ان دونوں کے ناموں پر غور نہ کرنے کے بارے میں بات چیت جاری ہے۔ انہیں جون میں شروع ہونے والے ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ سے بھی باہر کیا جاسکتا ہے۔

ایشان اور شریاس کے پاس بی سی سی آئی کے اصولوں پر عمل نہ کرنے کی اپنی وجوہات ہوسکتی ہیں لیکن بورڈ کے پاس اس میں سے کوئی بھی نہیں تھا۔ اس لیے وہ دونوں کھلاڑی جو کچھ عرصہ پہلے تک ہندوستانی کرکٹ کی اسکیم کا اٹوٹ حصہ تھے، اب سنٹرل کنٹراکٹ کا حصہ بھی نہیں ہیں اور ٹیم میں واپسی سے بہت دور ہیں۔

بی سی سی آئی نے دکھایا ہے کہ وہ اپنے قوانین کے ساتھ کتنا سخت ہے اور کھلاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کرنے کی صلاحیت رکھتاہے، چاہے وہ کوئی بھی ہو۔ یہ تقریباً چند ہفتے پہلے کی بات ہے جب بی سی سی آئی کے سکریٹری جئے شاہ نے تمام سنٹرل کنٹراکٹ یافتہ کھلاڑیوں کو ایک خط لکھا تھاکہ وہ آئی پی ایل کو ریڈ بال کرکٹ پر ترجیح نہ دیں۔

یہ خیال کیاجا رہا تھا کہ اس اقدام سے کشن اور ایئر جیسے کھلاڑیوں میں کچھ مثبت تبدیلی آئے گی۔ بورڈ نے ان کھلاڑیوں کو خبردار کیا تھاکہ وہ اپنا رویہ مکمل طورپر تبدیل کرلیں لیکن جب ایسا نہ ہوا تو بورڈ کے پاس سخت کارروائی کے علاوہ کوئی دوسرا راستہ نہیں بچا۔ یہ سارا تنازعہ دسمبر میں شروع ہوا تھا۔

دسمبر میں ایشان نے اچانک جنوبی افریقہ میں ہندوستانی ٹیم سے اپنی رہائی کی درخواست کی اور بی سی سی آئی نے اس پر رضامندی ظاہر کی۔ خیال کیا جاتا تھاکہ دستبرداری کی وجہ یہ تھی کہ وہ ذہنی طورپر تیار نہیں تھا اور وقفہ چاہتا تھا۔ اس درمیان کچھ رپورٹس منظر عام پر آئیں جن میں کہاگیا تھا کہ ایشان بار بار پلیئنگ الیون میں منتخب نہ ہونے پر خوش نہیں ہیں۔

اس کے علاوہ انہیں دبئی میں پارٹی کرتے ہوئے دیکھا گیا جو بی سی سی آئی کے ساتھ اچھا نہیں ہوا۔ اگرچہ ان دو مبینہ واقعات کی کبھی تصدیق نہیں ہوسکی ہے، لیکن خیال کیا جاتاہے کہ ان کا اہم کردار تھا۔ جب راہول دراویڈ سے اس بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے سب سے پہلے ایشان کے فیصلے کا احترام کیا، لیکن ساتھ ہی یہ بھی بتایاکہ کسی بھی کھلاڑی کو ہندوستان کیلئے کھیلنے کیلئے واپس آنے کیلئے ڈومیسٹک کرکٹ کے مشکل حالات سے گزرنا پڑے گا۔

تاہم سب کچھ بی سی سی آئی پر منحصر ہے۔ دراویڈ کے بیان کے بعد جب ایشان نے ابھی تک تعمیل نہیں کی تو بی سی سی آئی نے سخت کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا۔ بی سی سی آئی کو ایشان کے بریک لینے سے کوئی مسئلہ نہیں تھا، لیکن ورلڈ کپ میں ہندوستان کی دل دہلا دینے والی شکست سے صحت یاب ہونے کے بعد وہ آئی پی ایل سے پہلے اپنے نو منتخب کپتان ہاردک پانڈیا کے ساتھ ٹریننگ کرتے نظر آئے اور انہوں نے خود کو رانجی ٹرافی کیلئے دستیاب کرایا۔

جہاں تک شریاس ایر کی بات ہے تو اس کا معاملہ راز میں گھرا ہوا ہے۔ چند ہفتے پہلے تک ایئر کے ساتھ واحد مسئلہ ان کی فارم تھی کیونکہ وہ انگلینڈ کے خلاف پہلے دو ٹسٹ میچوں میں اپنا اثر نہیں دکھا سکے تھے۔ لیکن جیسے جیسے وقت آگے بڑھتا گیا اور وہ بقیہ تین ٹسٹ میچوں سے باہر ہوگئے، تصویر واضح ہوتی گئی۔ کچھ رپورٹس میں کہا گیا تھاکہ شریاس کمر کے درد سے لڑ رہے ہیں۔ تاہم انہیں ٹیم سے ڈراپ کرنے کی وجہ ان کی فارم تھی۔