دہلی

سپریم کورٹ دفعہ 370 کو چیلنج کرنے والی درخواستوں پر 2 اگست سے کرے گی سماعت

سپریم کورٹ سابقہ ​​جموں و کشمیر کو خصوصی درجہ دینے والے آئین کے آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنے کے مرکز کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی عرضیوں پر آئندہ 2 اگست سے پیر اور جمعہ کو چھوڑ کر تمام کام کے دنوں پر سماعت کرے گی۔

نئی دہلی: سپریم کورٹ سابقہ ​​جموں و کشمیر کو خصوصی درجہ دینے والے آئین کے آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنے کے مرکز کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی عرضیوں پر آئندہ 2 اگست سے پیر اور جمعہ کو چھوڑ کر تمام کام کے دنوں پر سماعت کرے گی۔

متعلقہ خبریں
سپریم کورٹ کا فیصلہ خدا کا فیصلہ نہیں ہے: محبوبہ مفتی
کشمیر میں دہشت گرد ماڈیول بے نقاب
انتخابات سے قبل لبھانے والے وعدوں پر سپریم کورٹ کا نوٹس
تین طلاق قانون کے جواز کو چالینج، سپریم کورٹ میں تازہ درخواست
کویتا، پیش نہیں ہورہی ہیں سپریم کورٹ میں ای ڈی کا انکشاف

چیف جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ اور جسٹس سنجے کشن کول، سنجیو کھنہ، جسٹس بی آر گووئی اور جسٹس سوریہ کانت پر مشتمل ایک آئینی بنچ نے منگل کو یہ حکم سنایا۔

آئینی بنچ 2 اگست کو صبح 10:30 بجے سے سماعت شروع کرے گی۔ اس سے قبل بنچ میں تمام فریقین کو 27 جولائی تک تمام دستاویزات داخل کرنے کی ہدایت بھی دی گئی ہے۔

تقریباً چار سال قبل 5 اگست 2019 کو مرکزی حکومت نے آئین کے دفعہ370 کو منسوخ کر دیا تھا۔

یہ معاملہ (دفعہ 370 کو منسوخ کرنے کے فیصلے کو چیلنج کرنے والا) آخری بار مارچ 2020 میں سپریم کورٹ میں درج کیا گیا تھا۔

اس کے بعد کچھ درخواست گزاروں نے اس معاملے کو سات ججوں کی آئینی بنچ کے سامنے سماعت کے لیے بھیجنے کی درخواست کی، لیکن بنچ نے ان کی درخواست کو مسترد کر دیا۔

فروری 2023 میں کچھ درخواست گزاروں کی جانب سے چیف جسٹس کی سربراہی میں بنچ کے سامنے معاملے کی جلد سماعت کے لیے درخواست کی گئی تھی۔

خصوصی ذکر کے دوران کی گئی اس درخواست پر بنچ نے کہا تھا کہ وہ مناسب وقت پر اس معاملے کی سماعت کے لیے درج رجسٹر کرنے پر فیصلہ کرے گی۔