مشرق وسطیٰ

اسرائیلی فوجیوں کی جنین میں فائرنگ، 17 سالہ فلسطینی شہید

فلسطینی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ تحریری بیان میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوجیوں کے جنین چھاپے کے دوران 17 سالہ فلسطینی عثمان ابو کے سر میں گولی لگی تھی۔

رملہ: اسرائیلی فوجیوں نے مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقے جنین میں ایک 17 سالہ فلسطینی کو گولی مار کر شہید کر دیا۔ اسرائیلی فوج نے حالیہ دنوں میں الا خلیل اور نبلوس شہروں میں 3 یہودی آباد کاروں کے ہلاک ہونے والے حملوں کے مجرموں کو پکڑنے کے لیے فلسطینی شہروں اور قصبوں پر چھاپے مارنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

متعلقہ خبریں
اسرائیلی فوجی حماس کے سامنے بری طرح ناکام : امریکی انٹلیجنس
غزہ اور مغربی کنارے پر اسرائیلی حملوں میں خواتین اور بچوں سمیت 17 فلسطینی شہید
اے پی وزیر کے قافلہ کی گاڑی سے ٹکر ایک شخص ہلاک
رفح پر اسرائیلی حملہ، خون کی ہولی کا باعث بن سکتا ہے: ڈبلیو ایچ او
غزہ کے عوام کا تاریخی صبر جس نے اسلام کا سر بلند کردیا: رہبر انقلاب اسلامی

کمک کی مدد سے اسرائیلی فوج کے یونٹوں نے مغربی کنارے کے شہروں الخلیل ، نبلولس، جنین، تلکرم اورکلکیا میں چھاپے مارے۔

فلسطینی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ تحریری بیان میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوجیوں کے جنین چھاپے کے دوران 17 سالہ فلسطینی عثمان ابو کے سر میں گولی لگی تھی۔

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا ہے کہ 19 اگست کو نبلوس کے قریب واقع قصبے حووارہ میں ایک مسلح حملے میں دو آباد کار مارے گئے۔ کل صبح الخلیل میں حملے کے نتیجے میں ایک آباد کار ہلاک اور دوسرا شدید زخمی ہوگیا۔

حملوں کے مرتکب افراد کو پکڑنے کے لیے فلسطینی شہروں اور قصبوں پر چھاپے مارنے والی اسرائیلی فوج نے گزشتہ روز 8 فلسطینیوں کو زندہ گولیوں سے زخمی کر دیا۔

دوسری جانب معلوم ہوا ہے کہ الخلیل شہر میں اسرائیلی فورسز کے چھاپوں کی وجہ سے آج ٹریننگ میں خلل پڑا۔