سوشیل میڈیامشرق وسطیٰ

مسجد الحرام کے فرش میں ٹھنڈک کا کیا راز ہے؟

مکہ معظمہ میں جھلستے ہوئے درجہ حرارت کے باوجود بھی مسجد الحرام کے فرش میں جو ٹھنڈک ہے اس کا کیا راز ہے۔

مکہ معظمہ: مکہ معظمہ میں جھلستے ہوئے درجہ حرارت کے باوجود بھی مسجد الحرام کے فرش میں جو ٹھنڈک ہے اس کا کیا راز ہے۔

کوئی بھی ایسا شخص جس نے عمرہ یا حج کیا ہو اس نے شائد اس بات کو نوٹ کیاہے کہ جب اس نے مسجدالحرام میں مطاف کے سنگ مرمر کے فرش پر قدم رکھاتو وہاں اسے ٹھنڈک محسوس ہوئی بہت سے لوگوں نے اس بات کی وجہ پر بحث کی اگرچیکہ شدید درجہ حرارت موسم گرما میں 5 ڈگری سیلسیس تک بڑھ جاتی ہے لیکن پتھروں کی ٹھنڈک محسوس ہوتی ہے۔

بعض لوگ یہ باور کررہے ہیں کہ فرش کے نیچے ایر کنڈیشنرس ہیں جبکہ یہ غلط بات ہے۔

حرمین شریفین کے امور کی عمومی صدارت نے بتایا کہ اس کی سب سے بڑی وجہ مطاف میں استعمال کردہ THASSOS سنگ مرمر کی قسم ہے جو ساری دنیا میں سب سے بڑا سطحی سنگ مرمر کہلایا جاسکتاہے۔

شاہ خالد کے دور میں انہوں نے سال 1398 ہجری میں مطاف کی توسیع کا حکم دیاتھا جبکہ پہلی مرتبہ اس کے فرش کو مذکورہ بالا نوعیت کے سنگ مرمر کے پتھروں سے آراستہ کیاگیاتھا جبکہ اس کے ذریعہ سورج کی کرنیں منکعس ہوجاتی ہیں اور اس کی وجہ سے دن میں گرمی محسوس نہیں ہوتی۔