امریکہ و کینیڈا

انٹرنیٹ پر غلط معلومات شیئر کرنے والوں کیخلاف گوگل کا اہم اقدام

یورپی یونین کے شہری خطے میں پالیسیوں اور قوانین کی منظوری کے لیےجون میں نئی یورپی پارلیمنٹ کا انتخاب کریں گے جس کیلئے قانون ساز خدشہ ظاہر کر رہے ہیں کہ آن لائن غلط معلومات کا پھیلاؤ ووٹرز کو متاثر کر سکتا ہے۔

واشنگٹن: انٹرنیٹ کے مقبول ترین سرچ انجن گوگل نے یورپی یونین کے انتخابات سے قبل غلط معلومات کے خلاف مہم شروع کرنے کا اعلان کر دیا۔

متعلقہ خبریں
کجریوال کے خلاف بی جے پی کی ”جھوٹا کہیں کا“ مہم کا آغاز
یو ٹیوب اور گوگل کو ہائی کورٹ کی نوٹس
نوح میں 28 اگست تک موبائل انٹرنیٹ سروس معطل
اے آئی بی اے کا گوگل کے خلاف مودی کو مکتوب
گوگل، ببل ٹی کی مقبولیت کا جشن منا رہا ہے

یورپی یونین کے شہری خطے میں پالیسیوں اور قوانین کی منظوری کے لیےجون میں نئی یورپی پارلیمنٹ کا انتخاب کریں گے جس کیلئے قانون ساز خدشہ ظاہر کر رہے ہیں کہ آن لائن غلط معلومات کا پھیلاؤ ووٹرز کو متاثر کر سکتا ہے۔

اس حوالے سے گوگل نے انتخابات سے قبل غلط معلومات کے خلاف مہم شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔ گوگل کی جانب سے غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کو بتایا گیا کہ گوگل آن لائن لائن پلیٹ فارمز پر غلط نشر ہونے والے مواد سے نمٹنے کے لیے سخت قوانین تیار کر رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق گوگل یورپی یونین کے 5 ممالک بیلجیئم، فرانس، جرمنی، اٹلی اور پولینڈ میں ٹک ٹاک اور یوٹیوب جیسے پلیٹ فارمز پر اشتہارات کی سیریز چلائے گا، ان اشتہارات کا 24 یورپی زبانوں میں ترجمہ بھی کیا جائے گا۔

گوگل کے مطابق اشتہارات میں کیمبرج اور برسٹل یونیورسٹیوں کے محققین کے ساتھ مل کر تیار کی گئی "پری بنکنگ” تکنیک کا استعمال کیا جائے گا، پری بنکنگ واحد تکنیک ہے جو سیاسی میدان میں مؤثر طریقے سے کام کرے گی۔

گوگل حکام کا کہنا ہے کہ یہ تکنیک ناظرین کو غلط معلومات اور غلط مواد کا سامنا کرنے سے پہلے ان کی شناخت کرنے میں مدد فراہم کرے گی۔

مہم سے متعلق گوگل کا کہنا ہے کہ یوٹیوب پر اشتہارات دیکھنے والے ناظرین سے ایک مختصر کثیر انتخابی سوالنامہ بھروایا جائے گا جو یہ جاننے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے کہ انھوں نے آن لائن پلیٹ فارمز پر انتخابات کے حوالے سے کس قسم کی غلط معلومات دیکھی ہیں۔