مشرق وسطیٰ

اسرائیل کا لبنان پر میزائل حملہ

اسرائیل نے جنوبی لبنان کے چار شہروں پر چار پیٹریاٹ میزائل فائر کیے، حالانکہ اس حملے میں جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

بیروت: اسرائیل نے جنوبی لبنان کے چار شہروں پر چار پیٹریاٹ میزائل فائر کیے، حالانکہ اس حملے میں جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں
فلسطینی فوٹو جرنلسٹ نے فرانس کا بڑا انعام ’فریڈم پرائز‘ جیت لیا
موت، تباہی اور غصہ کے درمیان غزہ میں خون سے رنگی عید
اسرائیل بین الاقوامی عدالتِ انصاف کے تمام فیصلوں پر جلد عمل درآمد کرے: ترکیہ
لبنان میں موجود کویتی شہریوں کو فوری وطن واپسی کی ہدایت
غزہ میں پہلا روزہ، اسرائیل نے فلسطینیوں کو مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے سے روک دیا

لبنان کے فوجی ذرائع نے جمعہ کو یہ اطلاع دی۔ انہوں نے کہا کہ تین میزائل مارجیون اور خیام میں گرے اور چوتھا میزائل جنوبی لبنان کے شہر الماری میں گرا۔ اس دوران کسی کے زخمی ہونے کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

ذرائع کے مطابق انہوں نے مقبوضہ شامی گولان کے جنوب مغربی حصے میں آئرن ڈوم پلیٹ فارم سے ان میزائلوں کے داغے جانے کی نگرانی کی۔

یہ دیکھتے ہوئے کہ لبنان سے اسرائیل کی طرف کوئی راکٹ نہیں داغے گئے۔ لبنان کی سرحد کے ساتھ تمام اسرائیلی بستیوں میں کئی منٹ تک سائرن بجتے رہے، اس کے بعد اسرائیلی لڑاکا طیارے سرحد کے اوپر اور لبنانی علاقوں عرقوب، مارجیون میں تقریباً دو گھنٹے تک پرواز کرتے رہے۔

واضح رہے کہ سنیچر کے روز حماس کے حملے کی حمایت میں اسرائیلی فوجی ٹھکانوں پر اتوار کی صبح لبنان میں واقع مسلح گروپ حزب اللہ کی جانب سے درجنوں میزائل داغے جانے کے بعد لبنان- اسرائیل سرحد پر صورتحال مزید خراب ہو گئی، جس کے نتیجے میں اسرائیلی فوج نے جنوب مشرقی لبنان کے کئی علاقوں میں بھاری توپ خانے کو نشانہ بنایا۔

دریں اثنا، لبنان میں اقوام متحدہ کی عبوری فورس ( یو این آئی ایف آئی ایل) کے سربراہ ارولڈو لازارو سائنز نے کہا کہ یو این آئی ایف آئی ایل لبنان اور اسرائیل کے درمیان کشیدگی کو روکنے کے لیے کام کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہمارا بنیادی مقصد لبنان اور اسرائیل کے درمیان تنازعہ سے بچنے میں مدد کرنا ہے اور کوئی بھی ایسا واقعہ جو تنازع کو قریب لاتا ہے، تشویشناک ہے۔‘‘

a3w
a3w