حیدرآباد

حیدرآباد میں نابالغ لڑکی کی اجتماعی عصمت دری

ایک 16 سالہ لڑکی کے ساتھ اس کے گھر میں تین افراد نے اجتماعی عصمت دری کی، ذرائع نے منگل کو بتایا۔

حیدرآباد: ایک 16 سالہ لڑکی کے ساتھ اس کے گھر میں تین افراد نے اجتماعی عصمت دری کی، ذرائع نے منگل کو بتایا۔

متعلقہ خبریں
ماہ صیام کا آغاز، مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اعلان
41 برسوں کے بعد کسی وزیراعظم کا دورہ عادل آباد
تلنگانہ میں ٹی ایس کے بجائے ٹی جی استعمال کی ہدایت، احکام جاری
تلنگانہ میں آئندہ 24 گھنٹے میں تیز ہوائیں چلنے کا امکان
بی آر ایس کے مزید 2 امیدواروں کا اعلان، سابق آئی اے ایس و آئی پی ایس عہدیداروں کو ٹکٹ

یہ واقعہ سوموار کو رچاکونڈہ پولس کمشنریٹ کے میرپیٹ پولیس اسٹیشن کی حدود کے تحت نندنوانم کالونی میں پیش آیا۔

متاثرہ کے گھر میں گھسنے والے ملزم نے اس کے بھائی اور تین دیگر بچوں کو دھمکیاں دینے کے بعد اسے چاقو کی نوک پر جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔

متاثرہ کی طرف سے درج کرائی گئی پولیس شکایت کے مطابق آٹھ نوجوانوں کا ایک گروپ گھر میں گھس گیا۔

چار ملزمان متاثرہ لڑکی کو عمارت کی تیسری منزل پر لے گئے جبکہ باقی نے اس کے بھائی اور گھر میں موجود دیگر تین بچوں کو دھمکیاں دیں۔

متاثرہ کو اوپر لے جانے والے چار ملزمان میں سے تین نے باری باری اس کی عصمت دری کی۔ لڑکی کے مدد کے لیے پکارنے پر وہ فرار ہو گئے۔

پولیس نے مقدمہ درج کر کے متاثرہ کو طبی معائنے کے لیے سخی سنٹر بھیج دیا۔

پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کے لیے سات ٹیمیں تشکیل دے دی ہیں۔ مجرموں کا سراغ لگانے کی کوششوں کے ایک حصے کے طور پر سی سی ٹی وی فوٹیج کو سکین کیا جا رہا ہے۔

رچاکونڈہ پولیس کمشنر ڈی ایس چوہان نے جائے وقوعہ اور میرپیٹ پولیس اسٹیشن کا دورہ کیا۔

میرپیٹ پولیس اس معاملے میں چار مشتبہ افراد سے پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

ملزمان گانجے کے زیر اثر بتائے جاتے ہیں۔ اُن میں ایک دو رُوڈی شیٹر بھی شامل تھے۔

متاثرہ ایک دلت ہےاور دلسکھ نگر میں کپڑے کی ایک دکان پر ملازم ہے، جبکہ اس کا چھوٹا بھائی فلیکسی لگانے میں بطور مددگار کام کرتا ہے۔

چند ماہ قبل اپنے والدین کو کھونے کے بعد، وہ کالونی میں شفٹ ہو گئے تھے اور ایک رشتہ دار کے پاس رہائش پذیر تھے۔