دہلی

وزیر اعظم مودی نے CAA کے ذریعہ آزادی کے وقت کا وعدہ پورا کردیا: امیت شاہ

مرکزی وزارت داخلہ نے چہارشنبہ سے ہندو، سکھ، بدھ، عیسائی، جین اور پارسی کمیونٹی کے لوگوں کو شہریت کا سرٹیفکیٹ دینا شروع کر دیا جو پاکستان، افغانستان اور بنگلہ دیش میں مذہبی ظلم و ستم کی وجہ سے یہاں آئے تھے۔

نئی دہلی: وزیر داخلہ امیت شاہ نے پاکستان، افغانستان اور بنگلہ دیش کے ایسے لوگوں کو شہریت کے سرٹیفکیٹ دینے کو تاریخی قدم قرار دیا ہے جو مذہبی ظلم و ستم کی وجہ سے ہندوستان میں آباد ہوئے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ اس سے آزادی کے وقت کیا گیا وعدہ پورا ہوگا۔

متعلقہ خبریں
یہ الیکشن مذہب کے تحفظ کا ہے:شاہ (ویڈیو)
پاکستان کے 100 سے زائد ہندوپناہ گزینوں کوہندوستانی شہریت منظور
نشستوں کی تقسیم پرمعاہدہ۔ ٹی ڈی پی کو این ڈی اے میں شامل ہونے بی جے پی کی دعوت
امیت شاہ کا جعلی ویڈیومعاملہ، 27 مقدمات درج
سی اے اے ریمارکس پر ہندو مہاجرین کا کجریوال کی قیام گاہ کے باہر احتجاج (ویڈیو)

مرکزی وزارت داخلہ نے چہارشنبہ سے ہندو، سکھ، بدھ، عیسائی، جین اور پارسی کمیونٹی کے لوگوں کو شہریت کا سرٹیفکیٹ دینا شروع کر دیا جو پاکستان، افغانستان اور بنگلہ دیش میں مذہبی ظلم و ستم کی وجہ سے یہاں آئے تھے۔

شہریت کے سرٹیفکٹ کی تقسیم پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے مسٹر شاہ نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم X پر لکھا ”مودی کی گارنٹی… وعدوں کی تکمیل کی گارنٹی۔ ‘‘

شاہ نے لکھا "آج ایک بہت ہی تاریخی دن ہے۔ آج کئی دہائیوں کا انتظار ختم ہوا اور سی اے اے کے ذریعے پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے مذہبی ظلم و ستم کی وجہ سے ہندوستان آنے والے ہندو، سکھ، بدھ، جین، پارسی اور عیسائی بہنوں اور بھائیوں کو ہندوستانی شہریت ملنا شروع ہوگئی ہے۔ آج نریندر مودی جی نے آزادی کے وقت کئے گئے وعدوں کو پورا کیا ہے۔

ایک اور پوسٹ میں وزیرداخلہ نے کہا “میں مودی جی کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے ان لوگوں کو انصاف اور حقوق دلائے جو دہائیوں سے مصائب کا شکار ہیں۔ ساتھ ہی، میں اپنی تمام مہاجر بہنوں اور بھائیوں کو یقین دلاتا ہوں کہ مودی حکومت سی اے اے کے ذریعے ہر پناہ گزین کو شہریت فراہم کرے گی۔

قابل ذکر ہے کہ مرکزی داخلہ سکریٹری اجے کمار بھلا نے بدھ کو 14 لوگوں کو شہریت کے سرٹیفکیٹ دے کر اس کی شروعات کی۔ بقیہ لوگوں کو ڈیجیٹل سرٹیفکیٹ ای میل کے ذریعے بھیجے جا رہے ہیں۔