مشرق وسطیٰ

سعودی شہزادہ محمد بن سلمان کی کنیڈین وزیراعظم اور فرانسیسی صدر سے اسرائیلی جارحیت رکوانے کی درخواست

عرب میڈیا کے مطابق فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو ٹیلی فون کرکے اسرائیل فلسطین کی حالیہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔

ریاض: سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو اور فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون سے رابطے کے دوران غزہ میں کشیدگی کم کرنے اور غزہ کا محاصرہ ختم کرنے پر زور دیتے ہوئے فلسطینیوں کی جبری بے دخلی کو مسترد کر دیا۔

متعلقہ خبریں
فرانسیسی صدر کی ایٹ ہوم تقریب میں شرکت
اسرائیل میں ویسٹ نائل بخار سے مرنے والوں کی تعداد 31 ہو گئی
فائیو آئی پارٹنرس نے انٹلیجنس جانکاری دی تھی
سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا آئندہ ہفتے دورہ پاکستان متوقع
سعودی پرنس محمد بن سلمان کا دورہ پاکستان ملتوی

عرب میڈیا کے مطابق فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو ٹیلی فون کرکے اسرائیل فلسطین کی حالیہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔

فرانسیسی صدر سے رابطے کے دوران سعودی ولی عہد نے غزہ کا محاصرہ ختم کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ خطے اور دنیا کی سکیورٹی کو درپیش ممکنہ خطرات سے بچانے کیلئے غزہ میں عام شہریوں پر فوجی حملے فوری بند ہونے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب عام شہریوں پر حملوں کو یکسر مسترد کرتا ہے۔ بین الاقوامی انسانی قوانین کی پاسداری کرتے ہوئے غزہ میں عام شہریوں اور انفرااسٹرکچر پر حملے اور عام لوگوں کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالنے کا عمل فوری بند ہونا چاہیے۔

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے فرانسیسی صدر سے بات چیت کرتے ہوئے فلسطینی ریاست کے قیام، دیرپا امن اور خطے میں استحکام کی بحالی پرزور دیا۔

کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے بھی سعودی ولی عہد کو فون کرکے اسرائیل فلسطین کے درمیان حالیہ کشیدگی میں اضافے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

سعودی میڈیا کے مطابق جسٹن ٹروڈو سے بات چیت کے دوران سعودی ولی عہد نے حالیہ کشیدگی میں کمی کیلئے ہر ممکنہ اقدامات کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ تشدد مزید نہ پھیلے۔

سعودی ولی عہد نے زور دیا کہ غزہ کا محاصرہ ختم کیا جائے تاکہ اسرائیلی بمباری سے متاثرہ شہریوں کو فوری طبی اور دیگر انسانی امداد پہنچائی جاسکے۔ انہوں نے غزہ سے شہریوں کے جبری انخلا اور فلسطینیوں کی بے دخلی کو بھی یکسر مسترد کیا۔

اس کے علاوہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ریاض میں سینیٹر لنڈسے گراہم کی سربراہی میں آئے امریکی وفد سے بھی ملاقات کی جس میں سعودی عرب اور امریکہ کے باہمی تعلقات اور اسرائیل فلسطین مسئلے میں کشیدگی کے حالیہ اضافے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

امریکی سینیٹر سے ملاقات کے دوران سعودی ولی عہد نے فلسطین میں جاری کشیدگی کے فوری خاتمے کے لئے اقدامات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یقینی بنایا جائے کہ فلسطین کے عوام کو ان کے جائز حقوق دیے جائیں گے۔

امریکی سینیٹر گراہم لنڈسے کے آفس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ خطے میں امن و استحکام کے قیام اور خوشحالی کے لئے سعودی عرب کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

سعودی ولی عہد سے ملاقات کرنے والے امریکی وفد میں رچرڈ بلومینتھل، کوری بوکر، کیٹی بریٹ، بین کارڈن، سوزین کولنز، کرس کونز، جیک ریڈ، ڈین سلیوان اور جون تھانے شامل تھے۔

a3w
a3w