کرناٹک

سدارامیا نے دیوے گوڑا کے پوتے ریوانا کے فحش ویڈیو کی ایس آئی ٹی تحقیقات کا حکم دیا

سدارامیا نے ایکس پر پوسٹ کئے گئے ایک سرکاری بیان میں، کہا، "اس پس منظر میں، خواتین کمیشن کی چیئرپرسن نے حکومت کو ایس آئی ٹی تحقیقات کرنے کے لیے لکھا تھا۔ یہ فیصلہ ان کی درخواست کے جواب میں لیا گیا ہے۔

بنگلورو: کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارامیا نے جنتا دل-ایس کے رکن پارلیمنٹ پرجول ریوانا سے متعلق فحش ویڈیو معاملے میں فیصلہ کن کارروائی کی ہے اور پریشان کن الزامات کی جانچ کے لئے خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی تشکیل کا اعلان کیا ہے۔

متعلقہ خبریں
اسکول ٹیچر کا فحش ویڈیو منظر عام پولیس میں شکایت درج
”آپ خود کو بار بار پٹوانے ہمارے ہاتھوں میں چھڑی کیوں دیتے ہیں:“ سدارامیا کا بی جے پی قائدین پر طنز
راہول گاندھی کا چیف منسٹر سدارامیا کو مکتوب
چیف منسٹر سدارامیا کی ہسپتال میں بم دھماکے کے زخمیوں سے ملاقات
رام مندر درشن کیلئے جاؤں گا، وقت کا تعین ابھی ممکن نہیں:سدارامیا

سدارامیا نے کہا، "حکومت نے مسٹر پرجول ریوانا کے فحش ویڈیو معاملے میں ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ضلع ہاسن میں فحش ویڈیو کلپس گردش کر رہے ہیں، جہاں ایسا لگتا ہے کہ خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی کی گئی ہے۔

سدارامیا نے ایکس پر پوسٹ کئے گئے ایک سرکاری بیان میں، کہا، "اس پس منظر میں، خواتین کمیشن کی چیئرپرسن نے حکومت کو ایس آئی ٹی تحقیقات کرنے کے لیے لکھا تھا۔ یہ فیصلہ ان کی درخواست کے جواب میں لیا گیا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ سدارامیا نے یہ قدم ہاسن ضلع میں مبینہ طور پر جنسی زیادتی کے واقعات کی تصویر کشی کرنے والے فحش ویڈیو کلپس کی گردش پر بڑھتے ہوئے خدشات کے درمیان اٹھایا ہے۔

کرناٹک ریاستی خواتین کمیشن کی چیئرپرسن ڈاکٹر ناگلکشمی چودھری نے مسٹر سدارامیا اور ریاستی پولیس سربراہ آلوک موہن کو 25 اپریل کو لکھے اپنے خط میں تحقیقات کی درخواست کی۔ خواتین کے پینل نے بھی فوری طور پر ہاسن میں وائرل جنسی ویڈیو کی مکمل تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

اس پیش رفت سے پہلے، کرناٹک ریاستی خواتین کمیشن میں ایک عرضی دائر کی گئی تھی، جس میں صورتحال کی سنگینی اور انصاف کے لیے عوامی احتجاج کو اٹھایا گیا تھا۔