مشرق وسطیٰ

دھڑ جُڑی بچیوں کا پیچیدہ اور طویل ترین آپریشن کامیاب (ویڈیو)

سعودی دارالحکومت ریاض میں نائیجرین دھڑ جڑی بچیوں کو الگ کرنے کا انتہائی پیچیدہ اور 14 گھنٹے طویل آپریشن کیا گیا جو کامیابی سے ہمکنار ہوا اور دونوں بچیاں جسم علیحدہ ہونے کے بعد صحتمند ہیں۔

ریاض: سعودی عرب میں دھڑ جڑی بچیوں کو پیچیدہ اور 14 گھنٹے طویل کامیاب آپریشن کے بعد علیحدہ کر دیا گیا۔

متعلقہ خبریں
سعودی عرب میں لڑکی سے غیر اخلاقی حرکت پر ہندوستانی شہری گرفتار
ایران سے 9 سال بعد پہلا گروپ عمرہ کیلئے روانہ
سعودی عرب میں پانچ پاکستانیوں کو سزائے موت دے دی گئی
سعودی عرب کا اسرائیل کے خلاف اہم بیان
سعودی عرب میں 2 خواتین سمیت 5 افراد کو سزائے موت

غیر ملکی میڈیا کے مطابق سعودی دارالحکومت ریاض میں نائیجرین دھڑ جڑی بچیوں کو الگ کرنے کا انتہائی پیچیدہ اور 14 گھنٹے طویل آپریشن کیا گیا جو کامیابی سے ہمکنار ہوا اور دونوں بچیاں جسم علیحدہ ہونے کے بعد صحتمند ہیں۔

کامیاب آپریشن کا سن کر گھنٹوں انتظار کی سولی پر لٹکے والدین مارے خوشی کے رو پڑے اور اظہار تشکر کے لیے فوری اللہ کے حضور سجدہ ریز ہو گئے۔

رپورٹ کے مطابق ریاض میں وزارت نیشنل گارڈ کے زیر انتظام شاہ عبداللہ میڈیکل سٹی میں نائیجرین بچیوں ’حسنہ اور حسینہ‘ جن کا پیٹ اور نچلا دھڑ جڑا ہوا تھا ان کو الگ کرنے کے آپریشن کا آغاز جمعرات کی صبح کیا گیا تھا جو انتہائی پیچیدہ ہونے کے باعث 14 گھنٹے تک جاری رہا۔

میڈیکل ٹیم کے سربراہ اور ایوان شاہی کے مشیر ڈاکٹر عبداللہ الربیعہ نے کہا کہ ’حسنہ اور حسینہ ‘ کو گزشتہ برس 31 اکتوبر کو مملکت لایا گیا تھا۔ جس کے بعد ان کے مختلف ٹیسٹ کیے گئے اور مختلف شعبوں کے ماہر سرجنوں کی ٹیم نے کئی دن تک کیس کا مطالعہ کیا تاکہ آپریشن کامیاب ہو۔

واضح رہے آپریشن کے حوالے سے ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ یہ انتہائی پیچیدہ پے جس میں کامیابی کے امکانات 70 فیصد ہو سکتے ہیں۔