شمالی بھارت

خوفناک ویڈیو دکھاکر نابالغ لڑکی کی عصمت ریزی کا واقعہ

خاتون کا الزام ہے کہ ملزم نے غلط کام کرتے ہوئے تصاویر بھی کھینچی تھیں۔ جب بیٹی نے نوجوان کو زبردستی ریپ کرنے سے روکا تو اس نے اسے دھمکی دی کہ وہ اس کے ساتھ بھیانک سلوک کرے گا۔

اونا: ہماچل پردیش کے انب تھانے کے ایک گاؤں کی 17 سالہ نابالغ کو خوفناک ویڈیو دکھا کر عصمت ریزی کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ یہی نہیں نوجوان نے ایک نابالغ کی فحش تصویر بھی سوشل میڈیا پر وائرل کر دی۔

متعلقہ خبریں
عرشیہ انجم کی مشتبہ موت : ہماچل پردیش پولیس افسر کی اقلیتی کمیشن پر حاضری
وائٹ ہاؤس کے گیٹ سے گاڑی ٹکرائی، ڈرائیور کی موت
چال چلن پر شبہ: 12سال سے گھر میں محروس خاتون بازیاب، دل دہلادینے والا واقعہ
نقلی پاسپورٹ اسکام کی تحقیقات میں تیزی،بیرونی ممالک گئے92 افراد کے خلاف لک آوٹ نوٹس
وقف بورڈ کا ریکارڈ روم مہر بند کرنے کا معاملہ، ہائیکورٹ جج سے تحقیقات کا مطالبہ

ماں کی شکایت پر پولیس نے ملزم نوجوان کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔ پولیس کو دی گئی شکایت میں خاتون نے کہاکہ ”میں کرائے کی دکان میں سلائی کا کام کرتی ہوں۔

میری 17 سالہ بیٹی اکثر دکان پر مدد کرتی ہے۔ دکان کے قریب ایک نوجوان بھی کام کرتا تھا جس کی وجہ سے میری بیٹی سے اس کی جان پہچان ہوگئی۔‘‘

خاتون کا الزام ہے کہ اس کی غیر موجودگی میں نوجوان نے اس کی بیٹی کو خوفناک ویڈیو دکھا کر اس کے ساتھ جسمانی تعلقات بنائے۔ پچھلے تین سال سے ملزم نوجوان بندوق، چاقو وغیرہ کی تصویریں دکھا کر اسے ڈرا دھمکا کر ہراساں کرتا تھا۔ یہی نہیں بیٹی سے ہزاروں روپے بھی مختلف قسطوں میں لیے ہیں۔

خاتون کا الزام ہے کہ ملزم نے غلط کام کرتے ہوئے تصاویر بھی کھینچی تھیں۔ جب بیٹی نے نوجوان کو زبردستی ریپ کرنے سے روکا تو اس نے اسے دھمکی دی کہ وہ اس کے ساتھ بھیانک سلوک کرے گا۔ ہفتہ کو یہ بات سامنے آئی کہ ملزم نے اپنی انسٹاگرام سائٹ پر میری بیٹی کی فحش تصاویر پوسٹ کی تھیں۔

 اس نے اپنے دوستوں کو دھمکیاں بھی بھیجی ہیں کہ اس کے پاس بہت سی تصاویر اور ویڈیوز ہیں، جنہیں وہ ایک ایک کرکے سوشل میڈیا پر پوسٹ کرتا رہے گا۔

انب کی ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولیس وسودھا سود نے کہا کہ شکایت کی بنیاد پر پولیس نے نوجوان کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے۔