حیدرآباد

جی او 3 سے خواتین کے حقوق سلب کرنے کی کوشش: کویتا

بی آر ایس کی رکن کونسل کے کویتا نے کہا کہ کانگریس حکومت جی ا و 3 کے ذریعہ لڑکیوں کے حقوق سلب کر رہی ہے۔ آج یہاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس جی او کی وجہ سے خواتین کے لیے روزگار کے مواقع کم ہوں گے۔

حیدرآباد: بی آر ایس کی رکن کونسل کے کویتا نے کہا کہ کانگریس حکومت جی ا و 3 کے ذریعہ لڑکیوں کے حقوق سلب کر رہی ہے۔ آج یہاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس جی او کی وجہ سے خواتین کے لیے روزگار کے مواقع کم ہوں گے۔

متعلقہ خبریں
بی آر ایس کی 16نیوز چانلس کے خلاف شکایت
حکومت ایل آر ایس پر مفت عمل آوری کویقینی بنانے: کے ٹی آر
1969 کی تحریک میں طلبہ پر کس نے گولی چلانے کی ہدایت دی؟ کے ٹی آر کا سوال
”آپ خود کو بار بار پٹوانے ہمارے ہاتھوں میں چھڑی کیوں دیتے ہیں:“ سدارامیا کا بی جے پی قائدین پر طنز
دونوں جماعتوں نے حیدرآباد کو لیز پر مجلس کے حوالے کردیا۔ وزیر اعظم کا الزام (ویڈیو)

انہوں نے کہا کہ کل اعلان کردہ رہایشی اسکولس میں تقررات کی فہرست میں صرف 77 جائیدادیں پر خواتین کے حصّہ میں آئی ہیں جملہ 6000 نوکریوں میں سے صرف 70 نوکریاں ہی خواتین کو دی گئی ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت فوری طور پر جی او نمبر 3 کو منسوخ کرے جو خواتین کے ساتھ ناانصافی پر مبنی ہے۔

انہوں نے کہا جی ا و 3 کے خلاف احتجاج جاری رہے گا۔ کویتا نے کہا کہ 8 مارچ کو یوم خواتین کے موقع پر دھرنا چوک اندرا پارک پرجی او 3 کے خلاف خواتین احتجاجی دھرنا دیں گی۔

انہوں نے کہا کہ روسٹر سسٹم کی وجہ سے مزید خواتین کا روزگار سے محروم ہو جانے کا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر ریونت ریڈی نے آج مودی کو اپنے بزرگ بھائی کہہ کر مخاطب کیا۔

اس کا مطلب ہے کہ بی جے پی اور کانگریس ایک ہی سکّہ کے دو رخ ہیں۔ کویتا نے چیف منسٹر سے مطالبہ کیا کہ وہ وضاحت کریں کہ مودی ہمارے لیے کیسے بزرگ بن سکتے ہیں جبکہ انہوں نے مرکزی بجٹ میں تلنگانہ کو ایک روپیہ بھی نہیں دیا۔

a3w
a3w