شمالی بھارت

بی جے پی لیڈر نے نابالغ لڑکے سے ووٹنگ کروائی (ویڈیو وائرل)

ملزم ونے مہر کا تعلق حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی سے بتایا جاتا ہے۔ اس سے متعلق ویڈیو آج سوشل میڈیا پر وائرل ہوا تھا، جس میں وہ ایک چھوٹے بچے سے ووٹ ڈلواتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔

بھوپال: مدھیہ پردیش کی دارالحکومت بھوپال میں جیسے ہی ایک شخص کے اپنے نابالغ بچے سے الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) پر ووٹ ڈلوانے اور اسے سوشل میڈیا پر وائرل کرنے کا معاملہ سامنے آیا۔ ضلع کلکٹر نے متعلقہ بوتھ کے پریذائیڈنگ افسر کو معطل کر دیا ملزم کے خلاف معاملہ درج کرایا ہے۔

متعلقہ خبریں
بی جے پی امیدوار ویشویشور ریڈی خاندان کے اثاثے 4,568 کروڑ
ای وی ایم بنانے والوں کے نام ظاہر کرنے سے انکار
سوشل میڈیا کے اثرات کی جانچ کیلئے پارلیمانی کمیٹی تشکیل
نازیبا سلوک پر اسسٹنٹ ٹیچر معطل
انتخابی ڈیوٹی پر مامور ملازمین کو ووٹ دینے کا ایک اور موقع

ملزم ونے مہر کا تعلق حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی سے بتایا جاتا ہے۔ اس سے متعلق ویڈیو آج سوشل میڈیا پر وائرل ہوا تھا، جس میں وہ ایک چھوٹے بچے سے ووٹ ڈلواتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔

کلکٹر کے ایکس ہینڈل پر کی گئی پوسٹ کے مطابق بیرسیا اسمبلی میں لوک سبھا انتخابات سے متعلق پیش رفت کا نوٹس لیتے ہوئے کلکٹر کوشلندر وکرم سنگھ نے بیرسیا پولنگ اسٹیشن نمبر 71 کھیتواس کے پریذائیڈنگ آفیسر سندیپ سینی بھیل کو فوری اثرات سے معطل کردیا ہے۔ متعلقہ شخص ونے مہر کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی گئی ہے۔

جیسے ہی یہ ویڈیو سامنے آیا، کلکٹر سنگھ نے بیرسیا کے ایس ڈی ایم کو تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ کانگریس کے کئی لیڈر اس ویڈیو کو سوشل میڈیا پر وائرل کر رہے ہیں۔ یہ پوسٹ کرتے ہوئے سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ کے میڈیا مشیر پیوش بابیلے نے الزام لگایا تھا کہ بی جے پی نے الیکشن کمیشن کو بچوں کا کھیل بنا دیا ہے۔

اس کے ساتھ ہی بیلے نے ایک اور ویڈیو پوسٹ کیا ہے اور الزام لگایا ہے کہ بی جے پی کولاراس ایم ایل اے کا بیٹا خود گونا پارلیمانی حلقہ کے ایک بوتھ پر خواتین کے ووٹ ڈالتے ہوئے نظر آرہا ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ زیر بحث ویڈیو گونا پارلیمانی حلقہ میں 7 مئی کو ہونے والی ووٹنگ کا ہے۔ مرکزی وزیر جیوترادتیہ سندھیا بی جے پی کی جانب سے گنا سے الیکشن لڑ رہے ہیں۔