بین الاقوامی

امید ہے کہ روس پر پابندی عائدکرنے کے حوالے سے جی7 ممالک برطانیہ کی پیروی کریں گے: سنک

ماسکو: برطانوی وزیر اعظم رشی سنک نے کہا ہے کہ وہ توقع کرتے ہیں کہ گروپ آف سیون (جی 7) روس کے خلاف پابندیاں عائد کرنے میں برطانیہ کی پہل کی پیروی کرے گا۔

ماسکو: برطانوی وزیر اعظم رشی سنک نے کہا ہے کہ وہ توقع کرتے ہیں کہ گروپ آف سیون (جی 7) روس کے خلاف پابندیاں عائد کرنے میں برطانیہ کی پہل کی پیروی کرے گا۔

متعلقہ خبریں
Video: برطانوی وزیر اعظم پر جرمانہ
تیل کی قیمتیں مزید بڑھنے کا امکان، سعودی عرب، تیل کی پیداوار میں کٹوتی جاری رکھے گا
ملک میں روس جیسی آمرانہ صورتحال: کجریوال
ہندوستانی شہریوں کو یوکرین جنگ میں دھکیلنے کا ریاکٹ، 4 گرفتار
روس یوکرین خونریز جنگ 11ماہ میں داخل

قابل ذکر ہے کہ مسٹر سنک نے جمعہ کو روس سے ہیروں کی درآمد پر پابندی کا اعلان کیا تھا۔

برطانوی پابندیوں میں ہیروں کی برآمدی منڈی پر 4 ارب ڈالر کی سیز بھی شامل ہے۔

دریں اثنا، یورپی کونسل کے صدر چارلس مشیل نے جاپان کے شہر ہیروشیما میں جی7 سربراہی اجلاس سے قبل کہا کہ یورپی یونین بھی ایسا ہی کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

مسٹر سنک نے جمعہ کے روز اسکائی نیوز کو دئے گئے انٹرویو میں کہا: "ہم اپنے اتحادیوں سے بات کر رہے ہیں اور مجھے امید ہے کہ دوسرے ممالک بھی ویسا ہی کریں گے جیسا کہ برطانیہ نے گزشتہ سال روس کے ساتھ کیا ہے۔

چاہے وہ یوکرین کو وسائل فراہم کرنے کی بات ہو یا روس کے خلاف پابندیوں کی۔ ہم نے دوسرے ممالک کو ہمارے ساتھ شراکت دار ہوتے دیکھا ہے۔

بالآخر پابندیاں اس وقت زیادہ موثر ہوتی ہیں جب وہ مربوط طریقے سے کی جائیں اور مجھے امید ہے کہ ہم یہاں بھی ایسا ہی دیکھیں گے۔”

اینٹورپ ورلڈ ڈائمنڈ سینٹر (اے ڈبلیو ڈی سی) کے ترجمان ٹام نیس نے جمعہ کو کہا کہ جی 7 کے ذریعہ روسی ہیروں پر پابندی عائد کرنے سے لندن میں ہیروں کی تجارت پر نہ ہونے کے برابر اثر پڑے گا، لیکن بیلجیئم کے شہر اینٹورپ کی مارکیٹ کو سخت نقصان پہنچے گا۔

قابل ذکر ہے کہ جی 7 چوٹی کانفرنس 19 سے 21 مئی تک ہیروشیما میں منعقد ہو رہی ہے اور اس میں اہم مسائل یوکرین تنازع، اقتصادی سلامتی، سبز سرمایہ کاری اور ہند-بحرالکاہل خطے کی ترقی ہیں۔

a3w
a3w