تلنگانہ
ٹرینڈنگ

مسجد جانے کے دوران مسلم طالب علم پر شرپسندوں کا حملہ۔ ٹوپی کو روندا گیا (ویڈیو)

ونپرتی ضلع مستقر میں مسلم طالب علم کو نماز کی ادائی کیلئے مسجد جانے کے دوران نام پوچھ کر ان پر حملہ کیا گیا۔ کل رات ایک مسلم نوجوان نماز پڑھنے مسجد جارہا تھا کہ ہندو شرپسندعناصر نے اس پر حملہ کیا ہے۔

ونپرتی: ونپرتی ضلع مستقر میں مسلم طالب علم کو نماز کی ادائی کیلئے مسجد جانے کے دوران نام پوچھ کر ان پر حملہ کیا گیا۔ کل رات ایک مسلم نوجوان نماز پڑھنے مسجد جارہا تھا کہ ہندو شرپسندعناصر نے اس پر حملہ کیا ہے۔

متعلقہ خبریں
بورا بنڈہ میں شرپسندوں کی جانب سے منصوبہ بند طریقہ پر ایک شخص پر قاتلانہ حملہ
سعودی عرب میں لڑکی سے غیر اخلاقی حرکت پر ہندوستانی شہری گرفتار
کنڑ فلم ’’ڈیر ڈیول مصطفی‘‘ ٹیکس سے مستثنیٰ
ویڈیو: چنگی چرلہ میں مسجد کے سامنے شرانگیزی۔ دوسرے دن بھی امن درہم برہم کرنے کی کوشش
مسجد بیت میں ناپاکی کی حالت میں بیٹھنا

تفصیلات کے مطابق ونپرتی ضلع مستقر میں موجود ایس سی ہاسٹل میں مقیم ڈپلومہ فارمیسی سال اول کے نوجوان جو کولّہ پور منڈل کے پداکوتہ پلی منڈل موضع چندارکلہ کے محمد معصوم 19 سالہ مسجد آمنہ خضر کو عشاء کی نماز ادا کرنے کے لیے جارہے تھے تو کچھ شرپسندوں نے نوجوان کو روک کر پوچھا کہ تم کہاں جارہے ہو؟ تو نوجوان بات کئے بغیر آگے جارہا تھا کہ انہیں روک کر طمانچہ رسید کیا۔

سر پر موجود ٹوپی کو سڑک پر ڈال کر پیروں سے روند دیااور نوجوان کو مار پیٹ کی گئی اس نوجوان نے اپنے کالج کے ساتھیوں کو آواز دی انہیں آتا دیکھ کر شرپسند نوجوان کو چھوڑ کر چلے گئے۔

نوجوان نے مسجد کے امام صاحب کو فون پر اطلاع دی، مسجد کے امام نے نوجوان کو دواخانہ منتقل کیا۔ پولیس نے نامعلوم شرپسندوں کے خلاف مقدمہ درج کیا اور تحقیقات جاری ہیں جب نمائندہ نے پولیس کے اعلی عہدیدار سے فون پر بات کی تو انھوں نے کہا کہ وہ تحقیقات کررہے ہیں۔

جلد از جلد شرپسند عناصر کو سخت سے سخت سزا دی جائے گی۔ زخمی مسلم نوجوان وطالب علم کو بہتر علاج کے لیے حیدرآباد منتقل کیا گیا ہے۔

a3w
a3w