دیگر ممالک
ٹرینڈنگ

سڈنی کے مال میں چاقوکے حملہ میں 5 افراد ہلاک ،پولیس نے حملہ آور کوگولی ماردی (ویڈیو وائرل)

ٹوئٹر پر ایک پوسٹ میں آسٹریلوی وزیر اعظم انتھونی البانی نے کہا کہ "ہمارے خیالات اس حملے میں جان سے ہاتھ دھونے والوں کے لواحقین کے ساتھ ہیں۔ ہم پولیس کی بہادری کو بھی سلام پیش کرتے ہیں۔"

نئی دہلی: آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں ہفتے کے روز ایک شاپنگ سینٹر (سڈنی مال سٹیبنگز) میں 5 افراد کو چاقو کے وار کر کے ہلاک کر دیا گیا۔ اس کے بعد حملہ آور کو پولیس نے گولی مار دی۔

متعلقہ خبریں
سوشل میڈیا کے اثرات کی جانچ کیلئے پارلیمانی کمیٹی تشکیل
انڈونیشیا میں سیلاب کی تباہ کاریاں، ہلاکتوں کی تعداد 41 ہو گئی
اروناچل میں مشتبہ انتہاپسند نے سابق رکن اسمبلی کو گولی ماردی
انوشکا نے ویراٹ کو گلے لگایا۔ تصویر وائرل
مسلم نوجوان کی ہلاکت، یوپی کے موضع میں کشیدگی

 یہ بات مقامی میڈیا میں کہی گئی ہے۔ پولیس نے کہا کہ انہیں اطلاعات ملی ہیں کہ سڈنی کے ایک شاپنگ سینٹر میں "متعدد لوگوں” کو چاقو مارا گیا ہے۔ یہ دل دہلا دینے والے واقعات ویسٹ فیلڈ بانڈی جنکشن مال کمپلیکس میں پیش آئے۔

ہفتہ کی دوپہر واقعہ کے وقت مال دکانداروں سے کھچا کھچ بھرا ہوا تھا پولیس نے بتایا کہ چھرا مار کے واقعہ کے بعد مال کو بند کردیا گیا ہے اور لوگوں سے اس جگہ سے دور رہنے کی اپیل کی گئی ہے۔ پولیس نے حملہ آور کو پکڑنے کے لیے فائرنگ بھی کی۔ اطلاعات کے مطابق چاقو مارنے کے واقعے میں 5 افراد ہلاک ہو گئے۔

آسٹریلوی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ویسٹ فیلڈ بانڈی جنکشن کو اس وقت خالی کرایا گیا جب عینی شاہدین نے بتایا کہ ایک شخص لوگوں کا پیچھا کر رہا تھا اور انہیں چاقو مار رہا تھا۔ دی سڈنی مارننگ ہیرالڈ کی رپورٹ کے مطابق کینبرا میں آسٹریلوی فیڈرل پولیس نے آسٹریلوی وزیر اعظم انتھونی البانی کو اس واقعے سے آگاہ کیا۔

 پولیس اس واقعے میں دہشت گردوں کے تعلق کی تحقیقات کر رہی ہے۔ ٹوئٹر پر ایک پوسٹ میں آسٹریلوی وزیر اعظم انتھونی البانی نے کہا کہ "ہمارے خیالات اس حملے میں جان سے ہاتھ دھونے والوں کے لواحقین کے ساتھ ہیں۔ ہم پولیس کی بہادری کو بھی سلام پیش کرتے ہیں۔”

نیو ساؤتھ ویلز کی ایمبولینس نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ پولیس نے ایک شخص کو گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ وہ حملہ آوروں میں سے ایک تھا، تاہم، چاقو کے پیچھے کا مقصد فوری طور پر واضح نہیں ہوا-

 ایک عینی شاہد نے بتایا کہ چھرا گھونپنے کے واقعے کے بعد مال میں افراتفری مچ گئی۔ مال میں موجود لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگ رہے تھے۔ پولیس علاقے کو محفوظ بنانے کی کوشش کر رہی تھی۔ بہت سے لوگوں نے ایک سپر مارکیٹ میں پناہ لی، جہاں وہ تقریباً ایک گھنٹے تک چھپے رہے۔ پورا علاقہ پولیس کے سائرن اور ہیلی کاپٹروں کی آوازوں سے گونج اٹھا۔