شمالی بھارت

مغربی بنگال میں بڑے پیمانے پر آدھار کارڈس کو ناکارہ بنائے جانے پر ممتا بنرجی سخت برہم، سی اے اے لاگو کرنے مرکز کی سازش کا الزام

آدھار کو لے کر مرکزی حکومت اور بنگال حکومت کے درمیان تنازع جاری ہے۔ گزشتہ چند دنوں سے کئی آدھار کارڈس کے غیر فعال کئے جانے پر ترنمول کانگریس بی جے پی پر حملے کررہی ہے۔

کلکتہ: آدھار کو لے کر مرکزی حکومت اور بنگال حکومت کے درمیان تنازع جاری ہے۔ گزشتہ چند دنوں سے کئی آدھار کارڈس کے غیر فعال کئے جانے پر ترنمول کانگریس بی جے پی پر حملے کررہی ہے۔

متعلقہ خبریں
سی اے اے کے مسئلہ پر کانگریس کے غیر واضح موقف: چیف منسٹر کیرالا
شہریت ترمیمی قانون اصل باشندوں پر اثرانداز نہیں ہوگا :سونووال
نئے فوجداری قوانین کا جائزہ لینے کمیٹی کی تشکیل۔ حکومت مغربی بنگال کا اقدام
ہجومی تشدد، بی جے پی اور میڈیا پر ساز باز کا الزام: ممتابنرجی
ممتا یکم جون کو ہونے والی انڈیا الائنس میٹنگ میں شامل نہیں ہوں گی

وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے بی جے پی کی سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی سیکریٹریٹ اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے فوری اقدامات کررہا ہے۔

پیر کو سکریٹریٹ میں ایک پریس کانفرنس سےخطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت ایک پورٹل شروع کر رہی ہے۔ جن کا آدھار غیر فعال ہو چکا ہے وہ پورٹل پر جا کر شکایت درج کر سکتے ہیں۔

ساتھ ہی وزیر اعلیٰ نے کہاکہ ریاست ان لوگوں کو الگ کارڈ دے گی جن کا آدھار منسوخ کردیا گیا ہے تاکہ بینکنگ اور دوسرے کام میں پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے گزشتہ جمعرات کو کہا تھا کہ انہیں شکایت ملی ہے کہ چند افراد کے آدھاکارڈ کو غیر فعال کردیا گیا ہے۔ انہوں نے چیف سکریٹری بی پی گوپالک کو ہدایت دی کہ جلد سے جلد اس مسئلے کو حل کرنے کیلئے کارروائی کی جائے۔

ریاست کے مختلف اضلاع سے آدھار کارڈ کے غیر فعال ہونے کی شکایات ملنے کے بعد عام لوگوں کے لیے اس سلسلے میں اپنی شکایات کی اطلاع دینے ایک پلیٹ فارم کے طور پر ایک پورٹل تشکیل دینے کی ہدایت دی گئی۔

واضح رہے کہ بی جے پی شروع سے ہی آدھار کے معاملے کو لے کر بے چین تھی۔ مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ نے پیر کی صبح دہلی میں اس پر ایک میٹنگ بھی کی۔ مرکزی آئی ٹی وزیر اشوینی ویشنو میٹنگ میں موجود تھے۔

بنگال سے ممبر پارلیمنٹ اور مرکزی وزیر شانتنو کے علاوہ ریاستی بی جے پی صدر سکانت مجمدار بھی اس میٹنگ میں موجود تھے۔ اس ملاقات کے بعد شانتانونے اس مسئلے کے لئے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب مکمل تکنیکی خرابی کی وجہ سے ہوا۔‘

ساتھ ہی انہوں نے اس کا حل بھی بتایا۔ تاہم ممتا بنرجی کا کہنا ہے کہ بی جے پی نے منصوبہ بندی کرکے آدھار کو غیر فعال کردیا ہے۔ غریب متوا Matua طبقہ کے لوگ اس کے زیادہ شکار ہوئے ہیں۔ دراصل یہ سب ترمیم شدہ شہریت قانون کو لاگو کرنے کے مقصد سے کیا گیا ہے لیکن میں ریاست میں کسی بھی طرح سے ایسا نہیں ہونے دوں گی۔

ساتھ ہی ممتا بنرجی نے شکایت کی کہ یہ سارا معاملہ ریاست یا ضلع انتظامیہ کو اندھیرے میں رکھ کر کیا گیا ہے۔ ممتا بنرجی نے یہ بھی کہا کہ ترنمول اس بارے میں الیکشن کمیشن کے پاس جائے گی۔

a3w
a3w