شمال مشرق

مغربی بنگال پولیس نے ٹی ایم سی لیڈر شاہجہاں شیخ کو گرفتار کرلیا

شاہجہاں پر شمالی 24 پرگنہ ضلع کے سندیشکھلی میں خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے اور قبائلیوں کی زمین ہتھیانے کا الزام ہے۔ اسے بشیرہاٹ کی ایک عدالت میں پیش کیا گیا جس نے اسے دس دن کی پولیس حراست میں بھیج دیا۔

کولکتہ: مغربی بنگال پولیس نے ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) کے مفرور لیڈر شاہجہان شیخ کو گرفتار کر لیا ہے۔ جنوبی بنگال کے اے ڈی جی سپروتیم سرکار نے جمعرات کو یہ اطلاع دی۔

متعلقہ خبریں
تحصیلدار رشوت قبول کرتے ہوئے گرفتار
اللہ، قطعی فیصلہ کرے گا: شیخ شاہجہاں
مفرور ٹی ایم سی قائد شیخ شاہجہاں 17 کاروں کا مالک
کیاممتا بنرجی بھی رام مندر کے افتتاح میں شرکت نہیں کریں گی؟
سعودی عرب میں لڑکی سے غیر اخلاقی حرکت پر غیر ملکی گرفتار

مسٹر سرکار نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ٹی ایم سی لیڈر کو بدھ کی رات میناکھان کے بامن کھولا گاؤں سے گرفتار کیا گیا اور شمالی 24 پرگنہ کی بشیرہاٹ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ کے لاک اپ میں بھیج دیا گیا۔

شاہجہاں پر شمالی 24 پرگنہ ضلع کے سندیشکھلی میں خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے اور قبائلیوں کی زمین ہتھیانے کا الزام ہے۔ اسے بشیرہاٹ کی ایک عدالت میں پیش کیا گیا جس نے اسے دس دن کی پولیس حراست میں بھیج دیا۔

ملزم، جو 5 جنوری کو سندیشکھلی کے سربیریا میں ان کے گھر پر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کے اہلکاروں اور سی آر پی ایف کے جوانوں پر مبینہ طور پر حملے کی منصوبہ بندی کرنے کے بعد اس واقعہ کے بعد سے گرفتاری سے بچ رہا تھا، اس کے خلاف غیر ضمانتی جرائم کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

ملزم کی طرف سے پیش ہونے والے ایڈوکیٹ راجہ بھومک نے کہا کہ پولیس نے 14 دن کی ریمانڈ کی درخواست کی تھی، لیکن عدالت نے دفاع کی طرف سے دائر درخواست ضمانت مسترد کرنے کے بعد 10 دن کے ریمانڈ کی اجازت دی۔

دریں اثنا، ذرائع نے بتایا کہ شاہجہان کی گرفتاری کے بعد، سی آر پی سی کی دفعہ 144 کے تحت سندیشکھلی اور اس کے آس پاس کے مختلف مقامات پر نئے امتناعی احکامات نافذ کیے گئے ہیں۔