حیدرآباد

مجلس بچاؤ تحریک کا پارلیمانی انتخابات سے متعلق اہم فیصلہ، حیدرآباد نشست کے تعلق سے تجسس ختم

مجلس بچاؤ تحریک (ایم بی ٹی) نے آج لوک سبھا انتخابات میں مقابلہ نہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے حیدرآباد لوک سبھا نشست سے پارٹی کے ترجمان مسٹر امجد اللہ خان خالد کے مقابلہ کرنے کے بارے میں پائے جانے والے تجسس کو ختم کردیا۔

حیدرآباد: مجلس بچاؤ تحریک (ایم بی ٹی) نے آج لوک سبھا انتخابات میں مقابلہ نہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے حیدرآباد لوک سبھا نشست سے پارٹی کے ترجمان مسٹر امجد اللہ خان خالد کے مقابلہ کرنے کے بارے میں پائے جانے والے تجسس کو ختم کردیا۔

متعلقہ خبریں
جلسہ کی منسوخی کے لئے پولیس ذمہ دار۔ امجد اللہ خاں کا الزام
مادھوی لتا کو وائی پلس زمرہ کی سیکوریٹی، بی جے پی میں ایک گرما گرم موضوع بحث
ایکس گریشیاء کا مطالبہ، امجداللہ خاں خالد سے نمائندگی
الیکشن کمیشن نے لوک سبھا انتخابی ووٹنگ کے اختتام پر ووٹروں کا شکریہ ادا کیا
دوسرے مرحلے کی پولنگ میں گزشتہ انتخابات کے مقابلے 5فیصد کم ووٹنگ

صدر پارٹی مسٹر مجید اللہ خان فرحت نے آج یہ واضح کردیا کہ فرقہ پرست قوتوں کو شکست دینے کے مقصد سے پارٹی نے جاریہ لوک سبھا انتخابات میں مقابلہ سے گریز کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں پارٹی سربراہ نے کہا کہ ملک کے موجودہ سیاسی حالات اس بات کے متقاضی ہیں کہ فرقہ پرست طاقتوں کو شکست دینے کے لئے ملت کو متحدہونا ہوگا۔

انہوں نے یہ واضح کیا کہ اگر مجلس بچاؤ تحریک حیدرآباد لوک سبھا حلقہ سے مقابلہ کرتی ہے تو ہمارے امیدوار کو بہ آسانی دیڑھ لاکھ تا دو لاکھ ووٹ حاصل ہوسکتے ہیں مگر ہم نہیں چاہتے کہ سیکولر ووٹ منتشر ہوں اور بی جے پی کو اس کا فائدہ پہنچے۔

ملت کے مفاد میں ہم نے انتخابات میں مقابلہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔پارٹی ترجمان مسٹر امجد اللہ خان خالد جنہوں نے حالیہ اسمبلی انتخابات میں حلقہ اسمبلی یاقوت پورہ سے مقابلہ کیا تھا اورانہیں صرف 878 ووٹوں سے شکست ہوئی تھی‘ پارلیمانی انتخابات میں بھی وہ حیدرآباد سے مقابلہ کرنے کے بارے میں غور کررہے تھے۔

انہوں نے اس کا بالواسطہ اشارہ بھی دیا تھا۔

a3w
a3w