بھارت

لوک سبھا انتخابات کا پہلا مرحلہ: 102 حلقوں میں ووٹنگ پرامن طور پر جاری

لوک سبھا انتخابات کے پہلے مرحلے کی ووٹنگ کا عمل جمعہ کو 21 ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں پرامن طریقے سے جاری ہے اور ابھی تک کسی ناخوشگوار واقعہ کی اطلاع نہیں ہے۔

نئی دہلی: لوک سبھا انتخابات کے پہلے مرحلے کی ووٹنگ کا عمل جمعہ کو 21 ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں پرامن طریقے سے جاری ہے اور ابھی تک کسی ناخوشگوار واقعہ کی اطلاع نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں
این ڈی اے کو 150 نشستیں تک نہیں ملیں گی: راہول گاندھی
ڈپٹی چیف منسٹر کی اہلیہ حلقہ کھمم سے ٹکٹ کی دعویدار
حیدر آباد کے 5 لاکھ 41 ہزار بوگس ووٹ فہرست سے حذف
مسلمان، بی جے پی کوووٹ دیں گے: صدر آسام یونٹ
آخری تاریخ کے بعد ووٹرلسٹ میں اندراج نہیں ہوگا: رونالڈ راس

صرف مغربی بنگال کے کوچ بہار کے ایک گاؤں میں معمولی تشدد کی اطلاع موصول ہوئی ہے جہاں بی جے پی اور ترنمول کارکنوں کے درمیان جھڑپ ہوئی جس میں کچھ لوگ زخمی ہوگئے۔

ملک کی 21 ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں آج صبح 7 بجے سے ووٹنگ شروع ہوئی اور شام 6 بجے تک جاری رہے گی۔ پولنگ اسٹیشنز پر ووٹرز کی لمبی قطاریں دیکھی گئیں۔ شدید گرمی سے راحت حاصل کرنے کے لیے ووٹرز صبح سے ہی پولنگ اسٹیشنز پر پہنچنا شروع ہو گئے۔

تمام 21 ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں ووٹنگ کے پہلے دو گھنٹوں میں (9 بجے تک) ووٹنگ کا فیصد درج اس طرح رہا۔

انڈمان اور نکوبار جزائر میں 8.64 فیصد، اروناچل پردیش میں 4.95، آسام میں 11.15، چھتیس گڑھ میں 12.02، جموں و کشمیر میں 10.43، لکشدیپ میں 5.59، مدھیہ پردیش میں 14.12، مہاراشٹر میں 6.98، منی پور 7.63، میگھالیہ 12.96 فیصد، میزورم 9.36 فیصد، ناگالینڈ میں 7.65، پڈوچیری میں 7.49 اور راجستھان میں 10.67، سکم میں 6.63، تمل ناڈو میں 8.21، تریپورہ میں 13.62، اتر پردیش میں 12.22، اتراکھنڈ 10.41، مغربی بنگال میں 15.09 فیصد اور بہار میں 9.23 فیصد ووٹنگ ہوئی۔

الیکشن کمیشن نے منصفانہ اور پرامن انتخابات کے انعقاد کے لیے سیکیورٹی کے وسیع انتظامات کیے ہیں اور بزرگ اور معذور ووٹرز کی سہولت کے لیے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔

a3w
a3w