مشرق وسطیٰ

اسرائیل کا رفح میں زمینی آپریشن، برطانیہ، سعودیہ اور امارات سمیت کئی ممالک کا اظہار مذمت

برطانیہ، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، قطر اور لبنان نے رفح میں فوجی آپریشن کرنے اسرائیلی فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے تباہ حال فلسطینیوں کی مزید تباہی کا اقدام قرار دیا ہے۔

ریاض: اسرائیل نے شمالی غزہ اور خان یونس کے بعد رفح شہر میں بھی زمینی آپریشن کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

متعلقہ خبریں
سعودی عرب کا اسرائیل کے خلاف اہم بیان
وزیر خارجہ ملایشیا، فلسطین کو اقوام متحدہ کی رکنیت کی وکالت کریں گے
رمضان میں مسجداقصیٰ کیلئے اسرائیل کی نئی پابندیاں
فلسطینی ریاست کے قیام کے بغیر اسرائیل سے تعلقات ممکن نہیں
اسرائیل، فوج کے ذریعہ امن قائم نہیں کرسکتا: یوروپین یونین

برطانیہ، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، قطر اور لبنان نے رفح میں فوجی آپریشن کرنے اسرائیلی فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے تباہ حال فلسطینیوں کی مزید تباہی کا اقدام قرار دیا ہے۔

اسرائیلی فیصلے کے بعد حماس نے بھی خبردار کر دیا ہے کہ اسرائیل کا رفح میں زمینی آپریشن یرغمالیوں کی رہائی بات چیت کو ختم کردے گا۔

اقوام متحدہ کے امدادی ادارے یونیسیف نے رفح میں زمینی آپریشن کے اسرائیلی منصوبے کو روکنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ رفح میں پناہ لیے ہوئے فلسطینی پہلے ہی کئی بار بے گھر ہوچکے ہیں، ان کے پاس رفح سے آگے جانے کی کوئی جگہ نہیں۔

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کا کہنا ہے کہ رفح میں حماس کے باقی رہ جانے والے دہشتگردوں کوختم کریں گے، جو کہہ رہے ہیں رفح میں آپریشن نہ کریں وہ ہمیں جنگ ہارنے کا کہہ رہے ہیں۔

ادھر غزہ میں اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملے جاری ہیں 7 اکتوبر سے جاری حملوں میں غزہ میں شہید فلسطینیوں کی تعداد 28 ہزار 337 سے زیادہ ہوگئی جبکہ اسرائیلی حملوں میں زخمی ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 67 ہزار سے زیادہ ہے۔

دوسری جانب القسام بریگیڈ کا کہنا ہے کہ پچھلے چار روز میں اسرائیلی حملوں سے 2 اسرائیلی یرغمالی ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔