یوروپ

120سال قبل لوٹے گئے نائجیریائی نوادرات واپس کر دیے

جرمن حکومت نے برطانوی نوآبادیاتی دور میں 120 سال سے زیادہ پہلے نائیجیریا سے لوٹے گئے 22 نوادرات واپس کر دیے ہیں۔

ابوجا: جرمن حکومت نے برطانوی نوآبادیاتی دور میں 120 سال سے زیادہ پہلے نائیجیریا سے لوٹے گئے 22 نوادرات واپس کر دیے ہیں۔

جرمن وزیر خارجہ اینالینا بیئربوک نے لوٹے گئے 22 نوادرات اپنے نائیجیرین ہم منصب جیفری اونیما کے حوالے کرتے ہوئے کہا کہ 120سال قبل برطانوی استعمار کے ہاتھوں لوٹے گئے کانسے کے نوادرات غلط تھے اور اسی لیے انہیں واپس کرنے کی ضرورت ہے۔

جرمن اہلکار نے کہا کہ نائجیریا کی طرف سے لوٹی گئی نوادرات کی واپسی کی درخواست کو کافی عرصے سے نظر انداز کیا گیا تھا۔ چوری شدہ نوادرات کی واپسی کے فیصلے کو ”غلط“ قرار دیتے ہوئے انہوں نے اسے درست کرنے کے مقصد سے اٹھایا گیا قدم قرار دیا۔

کیونکہ جرمن حکام نے ایک بار یہ جان کر یہ کانسے خریدے تھے کہ انہیں ”لوٹ اور چوری“ کرلئے گئے تھے۔ بیئرباک نے کہا کہ جرمنی جنوبی نائیجیریا کی ریاست ایڈو میں آرٹ پویلین کی تعمیر کے لیے فنڈ فراہم کرے گا، جہاں بینن کی تاریخی حکومت واقع تھی۔

اونیاما نے کہا کہ جرمنی اور نائیجیریا نے باقی دنیا کے لیے ایک معیار قائم کیا ہے، یہ دیکھتے ہوئے کہ نائجیریا کی حکومت ان نمونوں کو واپس لینے کے لیے پرجوش ہے جو حقیقت میں سب سے زیادہ آبادی والے افریقی ملک سے تعلق رکھتے ہیں۔

a3w
a3w