امریکہ و کینیڈا

خالصتانیوں نے ہندوستانی سفارتکار کو برطانیہ کے گردوارہ میں داخل ہونے سے روک دیا (ویڈیو)

یہ واقعہ کینیڈا کے حالیہ تنازعہ کے بعد سامنے آیا ہے جس میں ہندوستان پر دہشت گرد ہردیپ سنگھ ننجر کے قتل میں ملوث ہونے کا الزام لگایا گیا تھا۔ اس مبینہ ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد بھارت نے یہ معاملہ اٹھایا ہے۔

نئی دہلی: ہندوستان اور کینیڈا کے درمیان جاری کشیدگی کا اثر اب برطانیہ میں بھی نظر آرہا ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق برطانیہ میں ہندوستانی ہائی کمشنر وکرم ڈوریسوامی کو خالصتانی انتہا پسندوں نے سکاٹ لینڈ کے ایک گرودوارے میں داخل ہونے سے روک دیا ہے۔

متعلقہ خبریں
کینیڈا کا اسٹڈی پرمٹ اپلیکیشن سے متعلق اہم فیصلہ
پنجاب میں تنہا الیکشن لڑنا عام آدمی پارٹی اور کانگریس کا مشترکہ فیصلہ: کجریوال
ہندوستان کے خلاف کینڈا کے الزامات پر امریکہ کو سخت تشویش
ترنمول کانگریس قائد کا قتل باروپور میں کشیدگی
برطانیہ کے بادشاہ چارلس بیمار اسپتال میں داخل کیا جائے گا

 یہ واقعہ کینیڈا کے حالیہ تنازعہ کے بعد سامنے آیا ہے جس میں ہندوستان پر دہشت گرد ہردیپ سنگھ ننجر کے قتل میں ملوث ہونے کا الزام لگایا گیا تھا۔ اس مبینہ ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد بھارت نے یہ معاملہ اٹھایا ہے۔

اس واقعے سے متعلق ایک مبینہ ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے۔ اس ویڈیو میں ایک خالصتانی حامی دورائی سوامی کو گلاسگو کے ایک گرودوارے میں داخل ہونے سے روکتے ہوئے نظر آ رہا ہے۔

اس مبینہ ویڈیو میں دو افراد پارکنگ ایریا میں ہائی کمشنر کی گاڑی کے قریب نظر آ رہے ہیں۔ ان میں سے ایک کو گاڑی کا دروازہ کھولنے کی کوشش کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔ اس کے بعد ہائی کمشنر کی گاڑی گرودوارہ کے احاطے سے نکلتی ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ گرودوارہ مینجمنٹ کمیٹی نے ہندوستانی ہائی کمشنر کو مدعو کیا تھا۔ مبینہ ویڈیو کے ایک طویل ورژن میں خالصتانی انتہا پسندوں کو گردوارہ مینجمنٹ کمیٹی کے عملے کو دھمکیاں دیتے ہوئے بھی دیکھا جا سکتا ہے۔

ہندوستانی حکومت کی جانب سے فوری طور پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔ چونکہ معاملہ ہائی کمشنر کی سیکورٹی سے متعلق ہے، اس لیے ذرائع کا کہنا ہے کہ پولیس میں شکایت درج کرائی گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ ہندوستان کے وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے جمعہ کو دہشت گردوں کو پناہ دینے پر کینیڈا (انڈیا کینیڈا رو) پر سخت حملہ کیا تھا۔ امریکہ میں انہوں نے کہا کہ کینیڈا دہشت گردوں اور انتہا پسندوں کی پناہ گاہ بن چکا ہے۔

کل انہوں نے یہ کہا اور آج خود اس کا ٹھوس ثبوت بھی سامنے آگیا ہے۔ کینیڈا میں بیٹھے خالصتانی دہشت گرد ارشدیپ ڈالا کی ایک آڈیو منظر عام پر آئی ہے، جس میں وہ پنجاب کے تاجروں سے پیسے بٹورتے ہوئے سنا ہے۔ حالانکہ یہ ویڈیو چند ماہ پرانی بتائی جارہی ہے۔

ارشدیپ ڈالا کی یہ آڈیو اس بات کا ثبوت ہے کہ ہندوستان کے وزیر خارجہ نے کینیڈا کے بارے میں کچھ غلط نہیں کہا ہے۔ کیسے خالصتانی دہشت گرد کینیڈا میں بیٹھ کر پنجاب میں اپنی دہشت پھیلا رہے ہیں۔

کینیڈا میں بیٹھ کر ارشدیپ پنجاب کے بڑے تاجروں، ٹھیکیداروں، گلوکاروں اور شراب کے تاجروں سے بھی کافی عرصے سے بھتہ کی کالیں کر کے کروڑوں روپے بٹورتا رہا ہے۔

وہ خالصتان دہشت گردی کو فروغ دینے اور پنجاب میں اپنے گینگ کو مضبوط کرنے میں مصروف ہے۔ تقریباً 2 منٹ کے اس آڈیو میں ارشدیپ ڈالا پیسے کا مطالبہ کر رہا ہے اور نتائج بھگتنے کی دھمکی بھی دے رہا ہے۔