یوروپ

پوپ فرانسس کی ثالثی کو زیلنسکی نے مسترد کردیا

زیلنسکی نے ہفتے کے روز روم کے دورے کے دوران اطالوی میڈیا، کیتھولک پادریوں اور سینئر اطالوی حکام سے ملاقات کی۔ پوپ کئی بار کیف اور ماسکو کے درمیان ثالثی میں مدد کی پیشکش کر چکے ہیں۔

کیف: یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے روس کے ساتھ تنازعہ میں ثالثی کی پوپ فرانسس کی پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے پاس صدر ولادیمیر پوتن سے بات کرنے کے لیے کچھ نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں
ملک میں روس جیسی آمرانہ صورتحال: کجریوال
ہندوستانی شہریوں کو یوکرین جنگ میں دھکیلنے کا ریاکٹ، 4 گرفتار
تیل کی قیمتیں مزید بڑھنے کا امکان، سعودی عرب، تیل کی پیداوار میں کٹوتی جاری رکھے گا
روس یوکرین خونریز جنگ 11ماہ میں داخل

زیلنسکی نے ہفتے کے روز روم کے دورے کے دوران اطالوی میڈیا، کیتھولک پادریوں اور سینئر اطالوی حکام سے ملاقات کی۔ پوپ کئی بار کیف اور ماسکو کے درمیان ثالثی میں مدد کی پیشکش کر چکے ہیں۔

زیلینسکی نے کہا ’’میں آپ کے تقدس کا گہرا احترام کرتا ہوں… بات یہ ہے کہ ہمیں ثالثوں کی کوئی ضرورت نہیں ہے… ہمیں ایک ایکشن پلان پر کام کرنا چاہیے جو منصفانہ پرامن اور یوکرین میں امن کو یقینی بنائے۔‘‘

پوپ نے ویٹیکن میں یوکرین کے صدر کا استقبال کیا اور پال ’چھ‘ آڈینس ہال میں ذاتی طور پر ان کا استقبال کیا۔

a3w
a3w