جرائم و حادثاتحیدرآباد

معمول نہ دینے پر بالاپور میں برما کے پناہ گزین کا قتل

بتایاجاتا ہے کہ وادی صالحین کے کیمپ میں رہنے والا 22 سالہ محمد ابراہیم آج کام سے واپس آرہا تھا وہ روزانہ 700 روپئے کماتا تھا جبکہ مقامی روڈی شیٹر محمد آصف اور اس کے 6 ساتھیوں نے ابراہیم سے 2 ہزار روپئے معمول دینے کا مطالبہ کیا۔

حیدرآباد: برما میں ظلم وزیادتی کے بعد شہر میں پناہ لینے والے برما کے لوگوں کی جانیں بھی محفوظ نہیں رہیں۔

بتایاجاتا ہے کہ وادی صالحین کے کیمپ میں رہنے والا 22 سالہ محمد ابراہیم آج کام سے واپس آرہا تھا وہ روزانہ 700 روپئے کماتا تھا جبکہ مقامی روڈی شیٹر محمد آصف اور اس کے 6 ساتھیوں نے ابراہیم سے 2 ہزار روپئے معمول دینے کا مطالبہ کیا۔

اس نے کہاکہ میرے پاس 2000 روپئے نہیں ہیں جس پر اس ٹولی نے چاقو سے حملہ کرکے ابراہیم کا قتل کردیا۔

مقامی ذرائع نے بتایاکہ آصف اور اس کے ساتھی روزانہ اسی طرح لوگوں کو ہراساں کرتے ہیں اور ان کا پیسہ چھین لیتے ہیں۔

ایسا محسوس ہوتا ہے کہ وادی صالحین میں قانون جیسی کوئی چیز نہیں ہے۔

کمشنر پولیس سدھیر بابو کو ملزمین کے خلاف سخت کارروائی کرنی چاہئے۔

مزید بتایاجاتا ہے کہ 3دن قبل بھی مقتول کا سیل فون بھی آصف نے چھین لیا تھا اور آج آصف اور قیوم اور دیگر نے حملہ کرکے محمد ابراہیم کو بے رحمی سے قتل کردیا۔

a3w
a3w