حیدرآباد

نیپالی گیانگس سے چوکس رہنے حیدرآبادی عوام کو مشورہ

ڈی سی پی ٹاسک فورس رادھا کرشنا راؤ نے عوام کو مشورہ دیا ہے کہ وہ شہر میں نیپالی گیانگس سے چوکس رہیں۔

حیدرآباد: ڈی سی پی ٹاسک فورس رادھا کرشنا راؤ نے عوام کو مشورہ دیا ہے کہ وہ شہر میں نیپالی گیانگس سے چوکس رہیں۔

متعلقہ خبریں
اسمارٹ فونس چوری کرنے والی ٹولی بے نقاب، 31ملزمین گرفتار
قانون کی خلاف ورزی پر سخت کاروائی ہوگی: کمشنر پولیس سندیپ شنڈالیہ
حیدرآباد پولیس نے دکانوں اور ہوٹلوں کے لئے نیا ٹائم ٹیبل جاری کیا
بی آر ایس کے خلاف تیار کردہ 3 اشتہاری کاریں گاندھی بھون سے ضبط
گنیش جلوس کے دوران پولیس عہدیداروں کا رقص کرنے کا ویڈیو وائرل

جو نیپال سے یہاں آکر مکانات میں سیکوریٹی گارڈ، باورچی، ڈرائیور اور ہیلپرس کی حیثیت سے ملازمت اختیار کرتے ہیں۔

بالخصوص شمالی ہند کے خاندان جو یہاں ملازمت کے لئے آتے ہیں وہ نہ صرف انھیں ملازم رکھتے ہیں بلکہ اپنے سرونٹ کوارٹرس میں رہنے کے لئے جگہ بھی فراہم کرتے ہیں۔ ایسے ہزاروں نیپالی شہر میں مقیم ہیں۔

ان میں بعض ملازمت کے دوران مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث رہتے ہیں۔ چنانچہ مالکین کو چاہئے کہ وہ نیپالیوں کو ملازمت پر رکھنے سے قبل ان کی شناخت، ان کے وطن سے متعلق رہائشی ثبوت، شہر میں ان کے رشتہ داروں کا پتہ معلوم کریں۔

انھوں نے بتایا کہ نیپالی اکثر خوش حال اور امیر دولت مند خاندانوں کو تلاش کر کے ان کے پاس ملازمت کرتے ہیں۔ اس دوران وہ ان کا اعتماد بھی حاصل کرلیتے ہیں اور جب کبھی وہ مکان سے باہر جاتے ہیں موقع دیکھ کر ان کے مکان میں قیمتی زیورات اور نقد رقم کا سرقہ کر کے فیملی کے ساتھ نیپال فرار ہوجاتے ہیں۔

ڈی سی پی نے عوام کو مشورہ دیا کہ وہ نیپالیوں کو ملازم رکھنے سے قبل "Hawkeye” ایپ پر ان کی تفصیلات لوڈ کریں اور ان سے ان کے کردار سے متعلق نیپالی پولیس کا سرٹیفکیٹ طلب کریں۔

بعض واقعات میں لوگ مالک کے خاندان کو ڈرگس دے کر سرقہ کر کے فرار ہوجاتے ہیں۔ چنانچہ ان کی شناخت کی تفصیلات رکھنا ضروری ہے۔

a3w
a3w