ایشیاء

امریکہ مشرق وسطیٰ میں بحریہ کی تعیناتی کا ’بے بنیاد پروپیگنڈہ‘ بند کرے

چین نے امریکہ سے اپیل کی ہے کہ وہ اسرائیل-غزہ تنازعہ کے درمیان مشرق وسطیٰ میں چینی جنگی جہازوں کی تعیناتی کے بارے میں بے بنیاد پروپیگنڈے کو ختم کرے۔

بیجنگ: چین نے امریکہ سے اپیل کی ہے کہ وہ اسرائیل-غزہ تنازعہ کے درمیان مشرق وسطیٰ میں چینی جنگی جہازوں کی تعیناتی کے بارے میں بے بنیاد پروپیگنڈے کو ختم کرے۔

متعلقہ خبریں
پرینکا چوپڑا نے بالی ووڈ چھوڑنے کی وجہ بتاتی
مودی کے دورہ اروناچل پردیش پر چین کا احتجاج
اسرائیلی فوج کے فضائی حملوں میں مزید 27 فلسطینی شہید
فلسطینی فوٹو جرنلسٹ نے فرانس کا بڑا انعام ’فریڈم پرائز‘ جیت لیا
نیتن یاہو نے کم وسائل میں بھی لڑنے کا اعلان کیا

چینی سفارت خانے کے ترجمان لیو پینگیو نے اتوار کو ایک بیان میں یہ اطلاع دی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق، گائیڈڈ میزائل ڈسٹرائر سمیت چھ چینی جنگی جہاز پچھلے ہفتے سے مشرق وسطیٰ میں تعینات کیے گئے ہیں، جن میں عمان کی بحریہ کے ساتھ مشترکہ مشق بھی شامل ہے۔

مسٹر لیو نے بیان میں کہا ’’چینی پیپلز لبریشن آرمی نیوی کا بحری بیڑا اسکارٹ مشن کے لیے روانہ ہوا اور متعلقہ ممالک کے دوستانہ دورے کر رہا ہے۔متعلقہ فریقین کو حقائق کا احترام کرنا چاہیے اور بے بنیاد پروپیگنڈا بند کرنا چاہیے۔‘‘

دریں اثنا، پنٹاگن کے مطابق، ایران کی ’’پراکسی فورسز‘‘ کی طرف سے خطے میں امریکی افواج پر بڑھتے ہوئے حملوں کے درمیان، امریکہ یو ایس ایس آر ڈوائٹ ڈی آئیسین ہاور کیریئر اسٹرائیک گروپ کو خلیج فارس میں تعینات کر رہا ہے۔ اس کے علاوہ یو ایس ایس آر گیرالڈ آر فورڈ کیریر اسٹرائک گروپ کو مشرقی بحیرہ روم میں تعینات کیا گیا ہے تاکہ کسی بھی تیسرے فریق کو روکنے کے لیے کام کیا جا سکے جو اسرائیل کے خلاف تنازع میں ملوث ہونے پر غور کر سکتا ہے۔

a3w
a3w