حیدرآباد

تلنگانہ اسمبلی میں حقہ سنٹرس پرپابندی کا بل منظور

آج بجٹ سیشن کے چوتھے دن کی کارروائی کے آغاز کے موقع پر وزیرانفارمیشن ٹکنالوجی سریدھر بابو نے ایوان میں اس بل کو پیش کرتے ہوئے کہاکہ ریاست میں حقہ سنٹرس پر پابندی لگائی جانی چاہئے۔

حیدرآباد: تلنگانہ اسمبلی میں حقہ سنٹرس پرپابندی کا بل منظور کرلیاگیا۔آج بجٹ سیشن کے چوتھے دن کی کارروائی کے آغاز کے موقع پر وزیرانفارمیشن ٹکنالوجی سریدھر بابو نے ایوان میں اس بل کو پیش کرتے ہوئے کہاکہ ریاست میں حقہ سنٹرس پر پابندی لگائی جانی چاہئے۔

متعلقہ خبریں
حیدرآباد میں نومولود لڑکا کچرا کنڈی میں دستیاب
لوک سبھا الیکشن: ضابطہ اخلاق بہت جلد نافذ ہوگا: مرکزی وزیر کشن ریڈی
اسمبلی سیشن کا کل سے دوبارہ آغاز
لون ایپ کے ایجنٹس کی ہراسانی، ایک شخص نے خودکشی کرلی
شعبہ لائف سائنسس کیلئے50 ہزار گریجویٹس کو ہنر مند بنانے کا ہدف: سریدھر بابو

انہوں نے کہا کہ حقہ سگریٹ نوشی سے زیادہ نقصان دہ ہے۔حقہ پر پابندی کا فیصلہ 4 فروری کو ریاستی کابینہ کے اجلاس میں کیاگیا۔

انہوں نے کہاکہ حقہ، سگریٹ سے 1000 گنا زیادہ نقصان دہ ہے،ایک بار جب اس کی عادت ہو جائے نوجوان نشے کا شکار ہو جاتے ہیں۔

کانگریس حکومت نے ریاست تلنگانہ کے نوجوانوں اور عوام کی صحت پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے اس پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا۔

تمام جماعتوں نے بغیر کسی بحث کے ایوان میں حقہ پابندی بل کی متفقہ طور پر منظوری کو یقینی بنایا۔اس بل کی منظوری کے ساتھ ہی ریاست میں حقہ سنٹرس بند ہوجائیں گے۔

حقہ سے متعلق کسی بھی شئے کو خریدنا یا فروخت کرنا جرم قراردیاگیا ہے۔سریدھر بابو نے بل کو متفقہ طور پر منظور کرنے پر ایوان میں تمام جماعتوں کا شکریہ ادا کیا۔